فاٹا پارلیمنٹرین نے قبائلی عوام کی مینڈیٹ کا احترام نہیں کیا:حمید اللہ آفریدی


خیبر ایجنسی (بیورپورٹ)فاٹاپارلیمنٹرین نے قبائلی عوام کی مینڈیٹ کا احترام نہیں کیا ،قبائلی علاقوں کو ایک سو چھے سمجھے سازش کے تحت تباہی کی طرف لے جا رہے ہیں،قبائلی عوام ایک منصوبے کے تحت دہشت گردی مسلط کی لیکن پھر پاکستان زندہ باد کے نعرے لگائیں ،قبائلی عوام کو کسی صورت انضمام قبو ل نہیں ،سیاسی جماعتوں کے قائدین جمہوریت کے معنی اور مقصد نہیں سمجھتے ،سابق وفاقی وزیر حمید اللہ جان کا باڑہ قمبرآباد میں جلسے سے خطاب خیبر یونین کے زیر اہتمام باڑہ قمبر آباد میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے سابق وفاقی وزیر حمید اللہ جا ن آفریدی، ملک وارث خان آفریدی،بازار گل آفریدی ،ایف آر پشاور کے سابق ایم این اے بازگل آفریدی اور دیگر مشران نے کہا کہ انہوں نے پہلے ہی سفارشات کمیٹی کو مسترد کیا تھا کسی صورت فاٹا کو صوبے میں ضم نہیں ہونے دینگے انہوں نے کہا کہ بنی گا لہ ،منصورہ اور ولی باغ سے کئے گئے فیصلے قبو ل نہیں کرینگے پاکستا ن کے تما م سیا سی پارٹیوں میں جمہوریت کہا ہیں اورا نکے قائدین جمہوریت کی معنی اور مقصد نہیں سمجھتے وہ قبائلی علاقوں میں آئے انکو جمہوریت کی معنی اور مقصد سمجھائیں گے جمہوریت کی معنی ہے عوام کی طاقت لیکن سیاسی پارٹیوں کے قائدین نے قبائلی عوام کی رائے کو کوئی اہمیت نہیں دی انہوں نے کہا کہ عوام کا حق ہے کہ جو فیصلہ کر یں وہ اپنے حق میں کر سکتے ہیں لیکن وہ انکوں ایک فرسودہ اور ظالمانہ نظام کی طر ف قبائلی عوام کو لے جا رہے ہیں انہوں نے کہا سیاسی پارٹیاں قبائلی علاقوں کے معدنیا ت اور مراعات پر قبضہ کر ناچاہتے ہیں خیبر پختو نخوا کا37ارب ملتے ہیں جبکہ فاٹا کو اب بھی 27ارب ملتے ہیں لیکن فاٹا سیکرٹریٹ اور پولیٹکل انتظامیہ میں کر پشن کی وجہ گراونڈ پر کچھ نظر نہیں آرہا بلکہ صر ف کا غذات میں سکیمیں مکمل ہو تے ہیں انہوں نے کہا کہ ان پر ایف سی آر کی حمائتی کا تہمت لگا دیا گیا لیکن سب سے زیا دہ انہوں نے ایف سی آر کی مخالفت کی ہے وہ قبائلی عوام کیلئے علیحدہ کو نسل یا علیحدہ صوبہ مانگتے ہیں یعنی (خپلہ خاوہ خپل اختیار )کا نعرہ لگا تے ہیں انہوں نے کہا کہ خیبر پختو نخواہ اب بھی قبائلی عوام کی ٹیکسوں سے چلتا ہے ورسک ڈیم انکے علاقے میں ہیں اور صوبے کو آٹھ ارب روپے ملتے ہیں لیکن قبائلی عوام بجلی کیلئے تر س گئے جب بجلی مانگتے ہیں تو کہتے ہیں قبائلی عوام بل نہیں دیتا انہوں نے کہا کہ سارے ملک میں الیکشن اصلاحات ہو رہے ہیں لیکن کوئی قبائلی علاقوں میں الیکشن اصلاحات کی بات نہیں کر رہے ہیں کیونکہ یہی لوگ قبائلی علاقوں میں الیکشن میں بے تحا شہ رو پے استعمال کر تے ہیں اور روپے کی زور پر پھر منتخب ہو تے ہیں سب زیا دہ فاٹا میں الیکشن اصلاحات کی ضرورت ہیں انہوں نے کہا کہ فاٹا قدرتی وسائل سے مالا مال ہیں قبائلی علاقوں کے معدینات کی دنیا میں مثال نہیں ملتی اب باڑہ میں کوئلے کی کان نکل آئے ہیں جو دنیا کے بہترین کے کو ئلے میں شمار ہو تاہیں ان لوگوں کا انکے ساتھ ہمدردیاں نہیں ہیں بلکہ ان معدینات پر نظر ہیں انہوں نے کہا کہ حکمران غلط بیانی کر رہے ہیں کہ پچانوے فیصد ٹی ڈی پیز واپس جا چکے ہیں پنجاب کی طرح انکے شہداء زخمیوں اور گھروں کیلئے پیکج دیں آخر میں انہوں نے قبائلیت بچاو کا نعرہ لگا کر تحریک شروع کر نے کا اعلان کیا جلسے میں آفریدی اقوام نے ہزاروں کی تعداد میں شرکت کی باڑہ تاجر یونین نے بھی فاٹاگرینڈ الائنس اور خیبر یونین کی حمایت کا اعلان کیا