صحافیوں اور سکیورٹی اداروں کی قربانیاں قابل تحسین ہیں،مرتضیٰ بلوچ


ک جرنلسٹ الائنس کے اشتراک سے ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن، کراچی بار ایسوسی ایشن، ملیر بار ایسوسی ایشن کے نو منتخب عہدے داروں کے اعزاز میں ایک استقبالیہ اور یوم استقلال پاکستان کے حوالے سے تقسیم ایوار ڈ کی ایک تقریب النساء کلب گلشن اقبال میں منعقد ہوئی جس کی صدارت کراچی بار ایسوسی ایشن کے جنر ل سیکریٹری خالد نواز مروت نے کی جبکہ مہمان خصوصی مرتضیٰ بلوچ صوبائی وزیر کچی آبادی اور مہمان اعزازی نائب صدر کراچی پار ایسوسی ایشن کے منیر اے ملک ،صدر کراچی بار ایسوسی ایشن کے نعیم قریشی،تنظیم فلاح خواتین کی سربراہ محترمہ قمر النساء قمر ،سابق ممبر قومی اسمبلی ،محترمہ شاہدہ رحمانی ممبر قومی اسمبلی اور صد ر پیپلز پارٹی شعبہ خواتین کراچی شامل تھے۔سید اعجاز علی نوید نے خطبہ استقبالیہ پیش کرے ہوئے چیرمین پاک جرنلسٹ الائنس کے چیرمین سہیل عابدی کی سحافی برادری کے لئے کی جانے والی کوششوں کی تعریف کی اور انہیں زبردست خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ صحافیوں کے بچوں کی تعلیم، صحت اور رہائش جیسے بنیادی مسائل کو حل کرنے میں کوشاں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاک جرنلسٹ الائنس نے ہمیشہ زدد صحافت کے خلاف سینہ سپر ہو کر کام کیا انہوں نے کہا پروگرام کی کوریج کرنے والے صحافی اپنی جان ہتھیلی پر رکھ کر نذرانہ پیش کرتے ہیں اور ہم ان کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔ اعجاز علی نوید نے کہا کہ ہمارے ملک کے معزز وکلاء، افواج پاکستان، صحافی برادری، اور این۔جی اوز۔ اپنے ملک و قوم کی خدمت کا جذبہ رکھتے ہیں اور ہم سب کا مقصد ایک ہی ہے یہ مٹی ہمیں اپنی جان سے زیادہ عزیز ہے اور جب تک ہمارے جسم میں ایک بھی خون کا خطرہ ہے ہم دہشت کردوں کا خاتمہ کردیں گے انہوں نے تقریب کے حوالے سے کہا کہ یوم استقلال پاکستان کی یہ تقریب ہم سب کو مل بیٹھنے۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مرتضیٰ بلوچ صوبائی وزیر کچی آبادی مرتضیٰ بلوچ نے پاک جرنلسٹ الائنس کے چیرمین سہیل عابدی اور تنظیم فلاح خواتین کی سربرست قمر النسا قمر کو زبردست خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ اب کراچی میں ریجرز، پولیس اور قانون نافذ کرنے والوں کی کوششوں سے امن قائم ہوا ہے تو کراچی کی رونقیں بھی لوٹ آئی ہیں۔ اور انشاء اللہ یہ امن اب ہمیشہ کے لئے قائم رہے گا ۔انہوں نے کہا جمہوریت کے لئے بی بی نے بری قربانیاں دیں اور ان قربانیوں میں وکلاء برادری، صحافی اور قانون نافذ کرنے والوں کے بھی بے مثال قربانیوں کو ہمیشہ یاد رکھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ گیارہ سال تک زرداری کو جیل میں رکھنے والوں نے ان پر ایک بھی الزام ثابت نہ کرسکے۔انہوں نے کہا کہ اٹھارویں تریم کے بعد حاصل ہونے والے اختیارات کے بعد بھی سندھ میں کسی نے کوئی کام نہیں کیا اب جبکہ الیکشن میں بہت کم وقت رہ گیا ہے تو سب کو سندھ یاد آرہا ہے۔انہوں نے کہا کہ میں پاکستان کے بقا و استحکام و سلامتی کے لئے کام کررہا ہوں اور میں بھی آپ سب لوگوں کے ساتھ پاکستان کو خوشحال اور ترقی کرتا ہوا دیکھنا چاہتا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ ہیں تعلیم، صحت اور کھیل کے شعبوں پر توجہ دینا چاہئے تاکہ نوجوان نسل کھیلوں اور تعلیم کی طرف متوجہ ہو اس سے معاشرے میں پیدا ہونے و الی جرائم،اور برائیاں ختم ہوجائیں گی۔ قمر النسا قمر نے اپنے خطاب میں کہا کہ نوجوان نسل کو پاکستان کے لئے دی جانے والی قربانیوں سے آگاہی کے لئے ایسے پروگرام منعقد کے جانے چاہئے انہوں نے کہا کہ ہم سب کو مل جل کر کسی تفریق کے بغیر پاکستان کے لئے کام کرنا چاہئے انہوں نے کہا کہ ہم نے پاکستان تقسیم کرنے کے لئے نہیں بلکہ متحدہ رہنے کے لئے بنایا تھا۔ قمر النسا قمر نے کہا کہ ہماری پہچان ہی پاکستان ہے پاکستان کے بغیر ہماری کوئی شناخت نہیں ہے۔ اکرام اللہ نیازی نے کہا کہ حکومت منشیات کی روک تھام کے لئے موثر اقدامات کررہی ہے سکھر میں ایک سینٹر بھی قائم کیا گیا ہے جہاں منشیات کے لوگوں کو آگاہی دی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم تعلیمی اداروں میں بھی لیکجروں کے زریعے منشیات کے مضر اثرات سے نئی نسل کو آگاہ کرہے ہیں