افغانستان ،امریکی ڈرون حملے ،سکیورٹی فورسز کی کارروائیاں ،84داعش و طالبان جنگجو ہلاک


کابل(آئی این پی)افغانستان میں امریکی ڈرون حملوں اور سیکورٹی فورسز کے آپریشنز میں داعش اور طالبان کے 83شدت پسند ہلاک اور 34زخمی ہوگئے جبکہ 25کوگرفتار کرلیاگیا،ادھر افغان سیکورٹی فورسز نے داعش کے خفیہ ادارے کے سربراہ کو گرفتارکرنے کا بھی دعویٰ کیا ہے ۔اتوار کو افغان میڈیا کے مطابق مشرقی صوبہ ننگرہار میں ڈرون حملوں میں داعش کے 13جنگجو ہلاک ہوگئے ۔افغان نیشنل آرمی کی201صلیب کور کے بیان میں کہا گیا ہے کہ شدت پسندوں کو ضلع آچن اور دیہہ بالا میں نشانہ بنایا گیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ3شدت پسند ضلع آچن جبکہ 10دیہہ بالا میں مارے گئے ۔صوبائی پولیس کمانڈنٹ نے تصدیق کی ہے کہ ضلع آچن میں کی گئی کاروائی امریکی فورسز کی جانب سے کی گئی ۔حملوں میں افغان سیکورٹی فورسز اور مقامی افراد کو کوئی نقصان نہیں پہنچا۔ادھر افغان سیکورٹی فورسز نے داعش کے خفیہ ادارے کے سربراہ کو گرفتارکرلیا۔صوبائی پولیس کمانڈنٹ نے ننگرہار میں بتایا کہ تاج گل کو ضلع ہسیکا مینا میں آپریشن کے دوران گرفتار کیا گیا۔افغان نیشنل پولیس ،سپیشل فورسز نے ایک اور دہشتگرد کو بھی گرفتار کیا جس کے قبضے سے پستول ،تین موبائل فون اور لیپ ٹاپ برآمد کیا گیا ہے ۔مشرقی صوبہ پکتیکا میں فضائی کاروائی میں 10شدت پسند ہلاک ہوگئے ۔صوبائی گورنر زلمائی ویسا کا کہنا ہے کہ فضائی کاروائی ضلع دندپاتن کے گاؤں نارائی کمار میں کی گئی جس کے دوران ایک گھر میں طالبان کے ایک اجتماع کو نشانہ بنایا گیا۔حملے میں شہریوں کا کوئی جانی نقصان نہیں ہوا جبکہ شدت پسند وں کا اسلحہ اور گولہ بارود بھی تباہ ہوگیا۔گزشتہ 24گھنٹوں کے دوران افغان سیکورٹی فورسز کی ملک کے مختلف صوبوں میں کاروائیوں کے دوران 60طالبان جنگجو ہلاک اور34زخمی ہوگئے ۔ وزارت دفاع کے بیان میں کہا گیا ہے آپریشن صوبہ ننگرہار ،کپیسا،واردک،غزنی،قندھار،ارزگان،زابل،ہرات بغلان،خوست،جاؤزجان،فریاب اورہلمند میں کیے گئے ۔جن کے دوران 25شدت پسند وں کو گرفتار بھی کیا گیا ۔ڈیفنس سکورٹی فورسز کے مشترکہ آپریشن کے دوران شدت پسندوں کا اسلحہ اور گولہ بارود بھی قبضے میں لے لیا گیا۔