نیشنل ایکشن پلان کے تحت علماء کوفورتھ شیڈول سے نکالنے کافیصلہ خوش آئند ، ڈی سی او رحیمیار خان امن کمیٹی کااجلاس بلائیں ، مولانارشید لدھیانوی


رحیم یار خان (بیورو نیوز) جمیعت علمائے اسلام پاکستان کے مرکزی رہنما وسابق صوبائی امیرمولانا رشیداحمدلدھیانوی نے کہا ہے کہ پنجاب حکومت
(بقیہ نمبر6صفحہ12پر )
کانیشنل ایکشن پلان کے تحت علمائے کرام کوانٹی ٹیرارزم ایکٹ کے فورتھ شیڈول سے نکالنے کافیصلہ خوش آئندہے ‘ رحیم یارخان شہرسے جامعہ اسلامیہ بدرالعلوم حمادیہ کے مہتمم مولانااسماعیل جاجروی ‘ جامعہ قادریہ کے مہتمم مولاناقاضی شفیق الرحمن ‘ مدرسہ انوارالقرآن صادق آباد کے مہتمم مولانااسماعیل فاروقی جن کے نام فورتھ شیڈول میں ڈالے گئے ہیں پنجاب حکومت اس پرنظرثانی کرے ‘ علمائے کرام حکومت سے تعاون کررہے ہیں بلاجوازعلمائے کرام کوگھسیٹنااچھی بات نہیں ان کے نام فورتھ شیڈول سے خارج کیے جائیں ۔ان خیالات کااظہار انہوں نے جے یوآئی(ف) ضلع رحیم یارخان کے جنرل سیکرٹری مولاناقاضی خلیل الرحمن‘ تحصیل صدرمولانامفتی عبدالطیف‘ مفتی نعمان حسن لدھیانوی‘ مولاناقاضی جوادالرحمن‘ مولانامیرولی اللہ جاجروی‘ مولانامفتی اسعدیوسف جاجروی‘ قاری عبدالعزیزچانڈیہ ودیگرکے ہمراہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہاکہ انتظامیہ اصلاح واحوال کے لیے ایک پالیسی بنائے اوربلاوجہ پکڑدھکڑکاسلسلہ بندکیاجائے ‘ دہشت گردی یاسہولت کاروں کی کبھی حمایت کی ہے اورنہ ہی کریں گے ڈی سی اورحیم یارخان امن کمیٹی کی ایک بڑی میٹنگ بلائیں۔