چکوال ضمنی الیکشن، ن لیگ کے نوجوان امیدوار نے پی ٹی آئی کے بزرگ سیاستدان کو شکست دے دی

چکوال

چکوال (ڈیلی پاکستان آن لائن) پنجاب اسمبلی کے حلقہ پی پی 23 میں ہونے والے ضمنی الیکشن میں ن لیگی نوجوان امیدوار نے میدان مار لیا جبکہ پی ٹی آئی کے مخالف مگر سینئر امیدوار کو شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔
تفصیلات کے مطابق پی پی 23 تلہ گنگ میں مسلم لیگ ن کے ایم پی اے ملک ظہور اعوان کے انتقال کے بعد ان کے بھتیجے ملک شہریار اعوان کو ٹکٹ جاری کیا گیا تھا۔ ان کے مد مقابل پی ٹی آئی کے امیدوار ملک سرخرو اعوان تھے جنہوں نے 2013 میں بھی پی ٹی آئی کے ٹکٹ سے الیکشن میں حصہ لیا تھا اور بری طرح شکست کھائی تھی ۔

تلہ گنگ کے حلقہ پی پی 23میں ضمنی انتخاب ، مکمل نتیجہ جاننے کیلئے یہاں کلک کریں
2013 میں ہونے والے الیکشن کے دوران مسلم لیگ ن کے امیدوار ملک محمد ظہور انور (مرحوم)نے 54 ہزار 949 ووٹ حاصل کیے تھے جبکہ ان کے مد مقابل مسلم لیگ ق کے امیدوار سردار امجد الیاس نے 46 ہزار کے قریب اور پی ٹی آئی کے امیدوار کرنل (ر) سرخرو اعوان نے 23 ہزار 578 ووٹ حاصل کرکے تیسری پوزیشن حاصل کی تھی۔
الیکشن کے دوران جے یو آئی ف نے مسلم لیگ ن کے امیدوار کی حمایت کی جبکہ عام انتخابات میں دوسرے نمبر پر رہنے والے امجد الیاس نے بھی لیگی امیدوار کی حمایت کی۔د وسری جانب اپوزیشن کی اکثر جماعتوں نے پی ٹی آئی امیدوار کی حمایت کی تھی جبکہ پیپلز پارٹی اس الیکشن کے دوران نیوٹرل رہی ہے۔
لیگی امیدوار شہریار اعوان کو چچا کے انتقال کے بعد ہمدردی کا ووٹ بھی ملا ہے جبکہ الیکشن کے دوران انہیں نوجوان ہونے کا بھی فائدہ حاصل ہوا جس کی وجہ سے ان کی جیت کا مارجن کافی بڑا رہا ہے لیکن پی ٹی آئی امیدوار نے بھی اپنے ووٹ بڑھائے ہیں جو ن لیگ کیلئے واقعی تشویش کی بات ہے کیونکہ عام انتخابات میں صرف ایک سال وقت رہ گیا ہے اور ن لیگ ہمدردی کا ووٹ پہلے ہی حاصل کر چکی ہے۔ایسے میں اگر ن لیگ عوام کو ڈلیور کرنے میں کامیاب نہ ہو سکی تو عام انتخابات میں اسے پی ٹی آئی کی طرف سے ٹف ٹائم کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔