پاناما کیس کا جتنی جلدی فیصلہ ہو جائے قوم کیلئے اتنا ہی بہتر ہو گا : سراج الحق

کراچی صفحہ اول

 لاہور(خبر نگار خصوصی)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ پانامہ کیس وزیراعظم کی ذات یا سیاسی جماعتوں تک محدود نہیں ہے، اس کیس کے فیصلہ پر پاکستان کے مستقبل کا انحصار ہے، پانامہ کیس کا جتنی کم مدت میں فیصلہ ہو جائے قوم کے لئے اتنا ہی بہتر ہے، وزیراعظم خود عدالت میں آ کر تمام سوالات اور کنفیوزن کو دور کر سکتے ہیں، ہم کرپشن کے خلاف عدالتوں کے اندر بھی اپنے دلائل کے ساتھ ہیں اور عوام کو بھی آگاہ کر رہے ہیں جو بھی اپنی ناجائز دولت کو چھپانے کی خواہش رکھتا ہے اس کے لئے پانامہ ایک بہترین جگہ ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سپریم کورٹ کے باہر پانامہ لیکس کیس کی سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو میں کیا۔انہوں نے کہاکہ مسلم لیگ (ن) کے وکیل کمزور کیس لڑ رہے ہیں، حکومت لفاظی کے پیچھے چھپنا چاہتی ہے، آج کے دلائل سن کر اس بات کی اشد ضرورت محسوس ہوتی ہے۔ وزیراعظم میاں نوازشریف خود عدالت میں آئیں، وہ خود تمام سوالات اور کنفیوزن کو دور کر سکتے ہیں۔ ان کا وکیل نہیں کر سکتا۔ یہ کیس صرف وزیراعظم کی ذات تک یا سیاسی جماعتوں تک محدود نہیں ہے۔ اس کیس کے فیصلہ پر پاکستان کے مستقبل اور پاکستان کے 20 کروڑ عوام کا انحصار ہے۔ اب تک وہ کلیئر نہیں کر سکے کہ جو مل انہوں نے لگائی ہے ان کے لئے پیسہ کہاں سے آیا؟یہ بھی نہیں بتا سکے کہ لندن میں جو جائیدادیں ہیں ان کے لئے پیسہ کہاں سے آیا اور ان کے بچوں کے نام پاناما لیکس میں ہیں۔ اب تک ان پر بات ہی نہیں کر سکے۔ میں سمجھتا ہوں ہم نے جو درخواست دی ہے کہ نوازشریف کو خود آنا چاہئے ان کا کہنا تھا کہ دنیا کے بہت سارے حکمرانوں کے نام آئے ہیں۔