تازہ ترین

ای پیپر

ببرک کارمل جمالی

ببرک کارمل جمالی

بلوچستان کی چار بہادر خواتین

بلوچستان میں خواتین کی تعداد 58 لاکھ 60 ہزار 646 ہے۔ یہ قسمتی کی ماری ہیں اورپاکستان میں اگر کوئی سب سے پسماندہ ہے تو یہ صوبہ بلوچستانکی خواتین ہیں۔ اس حوالے سے ہم نے بلوچستان کی کچھ اہم خواتین سے بات چیت کی ہیں جنہوں نے بلوچستان کی ترقی میں اہم کارہائے نمایاں سر انجام دے رکھے ...

تفصیل پڑھیں

’’ اے لاکھو میرے جسم کو ٹھنڈا کر دے ٹھنڈا ‘‘بلوچستان کی ایک ایسی جگہ جہاں پہنچتے ہی لوگ یہ جملہ پکاراٹھتے ہیں کیونکہ ۔۔۔

بلوچستان کے دلکش نظاروں کو دیکھنے کیلئے ہم نے پیر لاکھو کا رخ کرنے کا ارادہ کیااور صبح چھ بج کر بیس منٹ پہ سب دوست میرے ہاں پہنچ گئے۔ ہم نے بائیک کے بریک اچھی طرح چیک کیئے اور تیل کی ٹینکی کوفل کروا دیا۔ شروع میں ہمارے سامنے ویران علاقے آئے جہاں پہ لوگ پانی کی بوند بوند کیلئے ترس ...

تفصیل پڑھیں

بلوچوں میں مقبول ایک ایسا نشہ جو ہر پاکستانی کرنا چاہئے گا

بلوچی سبز چائے کے اسقدر عادی ہیں کہ اسکو آپ ان کا نشہ ہی سمجھیں جسمیں ہرباسی مبتلا ہے۔ اب تو بلوچستان کے باسیوں نے سبز چائے کانام ہی بدل دیا ہے اوراب اس کا نام گرین ٹیکہنا شروع کردیا ہے ۔سبز چائے کا یہ مال ایران سے منگوایا جاتا ہے جس کو پٹی کہتے ہیں۔اگرچہ اب کمپنیوں نے بھی گرین ...

تفصیل پڑھیں

بلوچستان وارث کی تلاش میں ہے

بلوچستان رقبے کے اعتبار سے بڑا مگر آبادی کے لحاظ سے سب سے چھوٹا صوبہ ہے پورے پاکستان کی طرح اس سال بلوچستان میں بھی مردم شماری کروائی گئی ہے۔ پاکستانی آئین کے مطابق ہر دس سال بعد پورے ملک میں مردم شماری کروانا لازمی ہے مگر پاکستان میں مردم شماری بہ مشکل بیس بیس سال کے بعد ہوتی ...

تفصیل پڑھیں

قربانی کا صحتمند جانور کیسے خریدا جاسکتا ہے؟

پاکستان میں لوگ وہی جانور خریدتے ہیں جو ان کی رینج میں آتا ہے، ورنہ بڑے جانور میں حصہ ڈال دیتے ہیں ۔عید کے سیزن میں بیوپاری بڑے بڑے اور موٹے موٹے اور چربی شدہ جانوروں کو مارکیٹ میں لاتے ہیں۔ جن میں بھینس گائے اونٹ بھیڑ اور بکریاں شامل ہوتے ہیں۔ یہ جانور غریبوں سے سستے داموں ...

تفصیل پڑھیں

بلوچستان کے بجھے ہوئے ستارے

جبری مشقت بلوچستان میں عام سی بات ہے، اس وقت پورے ملک میں آٹھ لاکھ سے زائد لوگوں سے جبری مشقت کے ساتھ کام لیا جاتا ہے جن میں بھٹہ مزدور، نوکر، ہاری اور کسان جبری مشقت کا حصہ ہیں۔ یہ لوگ آزادانہ نقل و حرکت ، تعلیم اور صحت کی سہولیات جیسے حقوق سے محروم ہیں۔اس وقت پاکستان میں ...

تفصیل پڑھیں

مجھے تو یہ سانڈ چاہئے

پال پوس کر قربانی کے جانور کو قربان کرنا تو بہت کم ہوچکا ہے البتہ قربانی کے دنوں میں لاکھوں روپے میں انتہائی پلا ہوا اور خوبصورت جانور تلاش کرکے اسکے ساتھ شوبازی کرنا ہمارا کلچر بن گیا ہے۔اس کا نظارہ ان دنوں عام دیکھا جاسکتا ہے۔پلے ہوئے خوبصورت جانوروں کی تلاش میں پاکستان کے ...

تفصیل پڑھیں

عظیم ر ہنمامیر چاکر کی آخری آرام گاہ راکھ کا ڈھیر

وسطی پنجاب میں چاکر بلوچ کا قلعہ پاکستان کی قدیمی تہذیب کا گواہ ہے ۔ یہ قلعہ پنچاب کے ایک گاﺅں میں بلوچ عظیم رہنما چاکر بلوچ نے بنایا تھا ۔15 مربع کلومیٹر تک پھیلی ہوئی اسکی فصیل چوڑائی میں پچیس فٹ تھی جس سے میلوں دور تک دیکھا جا سکتا تھا۔ اس وقت اس محل کی طرف جو بھی آتا وہ اپنے ...

تفصیل پڑھیں

وہ آئے ہمارے گھر میں

پاکستان میں سب سے زیادہتعلیمی پسماندگی بلوچستان میں ہے جسے کم کرنے کیلئے بلوچستان میں مسلسل چار سالوں سے تعلیمی ایمرجنسی لگی ہوئی ہے۔ اسی سلسلہ میں صدر پاکستان ممنون حسین نے کوئٹہ میں بلوچستان یونیورسٹی کے کانوکیشن اور گولڈن جوبلی تقریبات میں شرکت کے لئے تشریف لائے۔ ...

تفصیل پڑھیں

بلوچ چرواہے جانوروں کی وہ باتیں بھی جانتے ہیں جو ماہرین نہیں سمجھ پاتے

ریگستان اور پہاڑوں میں بٹا ہوا بلوچستان مال مویشیوں کی جنت ہے، چرتے دوڑتے اور ہانکتے ہوئے جانور دیکھ کر بہت بھلا بھی لگتا ہے اور سوچ بھی جنم لیتی ہے کہ گوادر جیسے شہر کا صوبہ ابھی تک صدیوں پرانی روایات اور پیشوں سے منسلک ہے۔ ان مال مویشیوں کو چرانے والوں کو چرواہے کہا جاتا ہے۔ ...

تفصیل پڑھیں

دختران بلوچستان تعلیم کے لئے بے تاب

پاکستان کے قدرتی وسائل سے مالا مال صوبہ بلوچستان خواتین اور بچیوں کو قبائلی پابندیوں سمیت متعدد سماجی مشکلات کا سامنا ہے جن میں سے چند ایک کم عمری میں شادی اور حصول تعلیم سے دوری ہیں۔ بلوچستان میں صرف چند ہزار بچیاں دسویں جماعت تک پہنچ پاتی ہے جبکہ ہائی سکول کالج اور ...

تفصیل پڑھیں

چلتے ہو تو زیارت چلو

قدرتی حسن سے مالا مال سرزمین پاکستان میں وہ قابلِ ذکر حیرت انگیز مقامات بھی شامل ہیں جو برطانوی دورِ حکومت کے دوران تعمیر کیے گئے تھے۔ ایک وقت تھا کہ لوگ ان خوبصورت مقامات کی سیر کو جانے کیلئے ترستے تھے کیونکہ وہاں تک پہنچنا بڑا مشکل اور خطرناک ہوتا تھا مگر دنیا نے جیسے ترقی کی ...

تفصیل پڑھیں

خان قلات کا دیس

پاکستان کی تاریخ کا ایک اہم ترین بلوچ آ بادی کا شہرقلات اس وقت پانچ لاکھ سے زائد نفوس پر مشتمل بارونق شہر بن چکا ہے ۔ لیکن اسکی شان و شوکت قصہ پارینہ نہیں بنی بلکہ ریاست قلات کے آثار اب بھی اس شہر میں دیکھے جاکستے ہیں ۔یہ اپنے وقت کی خوشحال ریاست تھی لیکن اس کی اب حالت بہت کمزور ...

تفصیل پڑھیں

شال کوٹ سے کوئٹہ تک سفر

کوئٹہ کا پرانا نام شال کوٹ تھا۔ یہ ایک پرانا شہر ہے جس نے ترقی کی منزل طے کی تو یہ کوئٹہ بن گیا۔کوئٹہ کے لغوی معنیٰ 'قلعہ' کے ہیں۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ یہ نام کسی قلعہ کی وجہ سے نہیں ملا بلکہ اس کی وجہ یہ تھی کہ کوئٹہ چاروں طرف سے پہاڑوں سے گھرا ہوا شہر ہے جس سے وہ ایک قدرتی طور پہ ...

تفصیل پڑھیں

بلوچی چپل ،عید تہواروں کاتحفہ

سچ تو یہ ہے کہ بلوچستان میں عید کی عیدی بلوچی چپل کے بغیرنہیں پوری نہیں ہوتی، مرد ہوں یا خواتین اپنی عیدی ضرور لیتے ہیں اور وہ بھی بلوچی چپل کی صورت میں۔ بلوچی چپل نہ صرف بلوچستان کی ثقافت کا ایک حصہ ہے بلکہ پورے ملک میں لوگ اسے بہت شوق سے پہنتے ہیں ۔ یہ چپل دیدہ زیب ڈائزائن سے ...

تفصیل پڑھیں

میری ٹائم میوزیم کراچی

میری ٹائم میوزیم کراچی کا شمار پاکستان کے بہترین میوزیم میں ہوتا ہے ۔ ہماری ملاقات پاکستان بحریہ کے 19 ویں سابق سربراہ چیف آف نیول سٹاف ایڈمرل(ر) جناب آصف سندھیلہ صاحب کے ساتھ ہوئی تو انہوں نے میری ٹائم میوزیم کا دورہ کرنے کی دعوت دی لہذا ہم نے اس دعوت پت لبیک کہا اور میری ٹائم ...

تفصیل پڑھیں

بلوچستان کا شہتوت میوہ

بلوچستان میں توت کی کاشت کی تاریخ بہت پرانی اور کئی سو برسوں پر محیط ہے اور اب توت کو مقامی درخت کا درجہ مل ہوگیا ہے۔ برصغیر کی دیگرمقامی زبانوں میں، توت، توتہ، شہ توت بھی کہا جاتا ہے۔بلوچستان کی سر زمیں پہ توت کے لاکھوں درخت موجود ہیں۔ توت کی لکڑی کا رنگ ہلکا زرد، چمکدار زرد، ...

تفصیل پڑھیں

بلوچی سجی جو بھی کھائے، اسکے ہی گُن گائے

دنیا میں بلوچستان کی ’’سجی‘‘ اپنے ذائقے اور لذت کی وجہ سے پوری دنیا میں شہرت رکھتی ہے۔ سجی اگرچہ ملک کے دیگر بڑے شہروں میں بھی تیار کی جاتی ہے، لیکن بلوچستان میں تیار کی جانے والی سجی اپنی مثال آپ ہے۔ سجی کو تیار کرنے کیلئے بڑی مہارت کی ضرورت ہوتی ہے۔اس کو تیار کرنے ...

تفصیل پڑھیں

بلوچستان میں انسان اور جانور ایک گھاٹ پر پانی پیتے ہیں

پرانے وقتوں بارش اور دریاؤں میں پانی کی خاطر لوگ عورتوں،بچوں کی قربانی دیا کرتے تھے ۔لگتا ہے زمانہ بدلا نہیں ۔بلوچستان میں تھوڑے سے فرق کیساتھ خون بہانے کا یہ سلسلہ آج بھی جاری ہے۔ بلوچستان بھاگ ناری میں بارش کا پانی جیسے ہی پہنچتا ہے ،اس کے استقبال کے لیے بکریاں قربان کی جاتی ...

تفصیل پڑھیں

میرا عشق بلوچستان

بلوچستان میں مختلف قومیں آباد ہیں اوران سب کے رسم و رواج اپنے اپنے حلقے میں الگ الگ حیثیت رکھتے ہیں۔ مثلاً سندھیوں کی ثقافت لسبیلہ کی طرف سے بلوچستان میں داخل ہوئی تو کوئٹہ کی طرف پشتونوں کی ثقافت نے جنم لیا ۔سندھ اور پنجاب کی سرحدوں سے بھی ثقافت داخل ہوگئی گویا بلوچستان میں ...

تفصیل پڑھیں