تازہ ترین

ای پیپر

ببرک کارمل جمالی

ببرک کارمل جمالی

عظیم ر ہنمامیر چاکر کی آخری آرام گاہ راکھ کا ڈھیر

وسطی پنجاب میں چاکر بلوچ کا قلعہ پاکستان کی قدیمی تہذیب کا گواہ ہے ۔ یہ قلعہ پنچاب کے ایک گاﺅں میں بلوچ عظیم رہنما چاکر بلوچ نے بنایا تھا ۔15 مربع کلومیٹر تک پھیلی ہوئی اسکی فصیل چوڑائی میں پچیس فٹ تھی جس سے میلوں دور تک دیکھا جا سکتا تھا۔ اس وقت اس محل کی طرف جو بھی آتا وہ اپنے ...

تفصیل پڑھیں

وہ آئے ہمارے گھر میں

پاکستان میں سب سے زیادہتعلیمی پسماندگی بلوچستان میں ہے جسے کم کرنے کیلئے بلوچستان میں مسلسل چار سالوں سے تعلیمی ایمرجنسی لگی ہوئی ہے۔ اسی سلسلہ میں صدر پاکستان ممنون حسین نے کوئٹہ میں بلوچستان یونیورسٹی کے کانوکیشن اور گولڈن جوبلی تقریبات میں شرکت کے لئے تشریف لائے۔ ...

تفصیل پڑھیں

بلوچ چرواہے جانوروں کی وہ باتیں بھی جانتے ہیں جو ماہرین نہیں سمجھ پاتے

ریگستان اور پہاڑوں میں بٹا ہوا بلوچستان مال مویشیوں کی جنت ہے، چرتے دوڑتے اور ہانکتے ہوئے جانور دیکھ کر بہت بھلا بھی لگتا ہے اور سوچ بھی جنم لیتی ہے کہ گوادر جیسے شہر کا صوبہ ابھی تک صدیوں پرانی روایات اور پیشوں سے منسلک ہے۔ ان مال مویشیوں کو چرانے والوں کو چرواہے کہا جاتا ہے۔ ...

تفصیل پڑھیں

دختران بلوچستان تعلیم کے لئے بے تاب

پاکستان کے قدرتی وسائل سے مالا مال صوبہ بلوچستان خواتین اور بچیوں کو قبائلی پابندیوں سمیت متعدد سماجی مشکلات کا سامنا ہے جن میں سے چند ایک کم عمری میں شادی اور حصول تعلیم سے دوری ہیں۔ بلوچستان میں صرف چند ہزار بچیاں دسویں جماعت تک پہنچ پاتی ہے جبکہ ہائی سکول کالج اور ...

تفصیل پڑھیں

چلتے ہو تو زیارت چلو

قدرتی حسن سے مالا مال سرزمین پاکستان میں وہ قابلِ ذکر حیرت انگیز مقامات بھی شامل ہیں جو برطانوی دورِ حکومت کے دوران تعمیر کیے گئے تھے۔ ایک وقت تھا کہ لوگ ان خوبصورت مقامات کی سیر کو جانے کیلئے ترستے تھے کیونکہ وہاں تک پہنچنا بڑا مشکل اور خطرناک ہوتا تھا مگر دنیا نے جیسے ترقی کی ...

تفصیل پڑھیں

خان قلات کا دیس

پاکستان کی تاریخ کا ایک اہم ترین بلوچ آ بادی کا شہرقلات اس وقت پانچ لاکھ سے زائد نفوس پر مشتمل بارونق شہر بن چکا ہے ۔ لیکن اسکی شان و شوکت قصہ پارینہ نہیں بنی بلکہ ریاست قلات کے آثار اب بھی اس شہر میں دیکھے جاکستے ہیں ۔یہ اپنے وقت کی خوشحال ریاست تھی لیکن اس کی اب حالت بہت کمزور ...

تفصیل پڑھیں

شال کوٹ سے کوئٹہ تک سفر

کوئٹہ کا پرانا نام شال کوٹ تھا۔ یہ ایک پرانا شہر ہے جس نے ترقی کی منزل طے کی تو یہ کوئٹہ بن گیا۔کوئٹہ کے لغوی معنیٰ 'قلعہ' کے ہیں۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ یہ نام کسی قلعہ کی وجہ سے نہیں ملا بلکہ اس کی وجہ یہ تھی کہ کوئٹہ چاروں طرف سے پہاڑوں سے گھرا ہوا شہر ہے جس سے وہ ایک قدرتی طور پہ ...

تفصیل پڑھیں

بلوچی چپل ،عید تہواروں کاتحفہ

سچ تو یہ ہے کہ بلوچستان میں عید کی عیدی بلوچی چپل کے بغیرنہیں پوری نہیں ہوتی، مرد ہوں یا خواتین اپنی عیدی ضرور لیتے ہیں اور وہ بھی بلوچی چپل کی صورت میں۔ بلوچی چپل نہ صرف بلوچستان کی ثقافت کا ایک حصہ ہے بلکہ پورے ملک میں لوگ اسے بہت شوق سے پہنتے ہیں ۔ یہ چپل دیدہ زیب ڈائزائن سے ...

تفصیل پڑھیں

میری ٹائم میوزیم کراچی

میری ٹائم میوزیم کراچی کا شمار پاکستان کے بہترین میوزیم میں ہوتا ہے ۔ ہماری ملاقات پاکستان بحریہ کے 19 ویں سابق سربراہ چیف آف نیول سٹاف ایڈمرل(ر) جناب آصف سندھیلہ صاحب کے ساتھ ہوئی تو انہوں نے میری ٹائم میوزیم کا دورہ کرنے کی دعوت دی لہذا ہم نے اس دعوت پت لبیک کہا اور میری ٹائم ...

تفصیل پڑھیں

بلوچستان کا شہتوت میوہ

بلوچستان میں توت کی کاشت کی تاریخ بہت پرانی اور کئی سو برسوں پر محیط ہے اور اب توت کو مقامی درخت کا درجہ مل ہوگیا ہے۔ برصغیر کی دیگرمقامی زبانوں میں، توت، توتہ، شہ توت بھی کہا جاتا ہے۔بلوچستان کی سر زمیں پہ توت کے لاکھوں درخت موجود ہیں۔ توت کی لکڑی کا رنگ ہلکا زرد، چمکدار زرد، ...

تفصیل پڑھیں

بلوچی سجی جو بھی کھائے، اسکے ہی گُن گائے

دنیا میں بلوچستان کی ’’سجی‘‘ اپنے ذائقے اور لذت کی وجہ سے پوری دنیا میں شہرت رکھتی ہے۔ سجی اگرچہ ملک کے دیگر بڑے شہروں میں بھی تیار کی جاتی ہے، لیکن بلوچستان میں تیار کی جانے والی سجی اپنی مثال آپ ہے۔ سجی کو تیار کرنے کیلئے بڑی مہارت کی ضرورت ہوتی ہے۔اس کو تیار کرنے ...

تفصیل پڑھیں

بلوچستان میں انسان اور جانور ایک گھاٹ پر پانی پیتے ہیں

پرانے وقتوں بارش اور دریاؤں میں پانی کی خاطر لوگ عورتوں،بچوں کی قربانی دیا کرتے تھے ۔لگتا ہے زمانہ بدلا نہیں ۔بلوچستان میں تھوڑے سے فرق کیساتھ خون بہانے کا یہ سلسلہ آج بھی جاری ہے۔ بلوچستان بھاگ ناری میں بارش کا پانی جیسے ہی پہنچتا ہے ،اس کے استقبال کے لیے بکریاں قربان کی جاتی ...

تفصیل پڑھیں

میرا عشق بلوچستان

بلوچستان میں مختلف قومیں آباد ہیں اوران سب کے رسم و رواج اپنے اپنے حلقے میں الگ الگ حیثیت رکھتے ہیں۔ مثلاً سندھیوں کی ثقافت لسبیلہ کی طرف سے بلوچستان میں داخل ہوئی تو کوئٹہ کی طرف پشتونوں کی ثقافت نے جنم لیا ۔سندھ اور پنجاب کی سرحدوں سے بھی ثقافت داخل ہوگئی گویا بلوچستان میں ...

تفصیل پڑھیں

کچھ ذکر کوئٹہ کی لوکل بسوں کا

میری اس تحریر کا مقصد یہ بتانا ہے کہ ہم بلوچ جتنا اپنی ثقافت،اپنی آن اور اپنے لوگوں سے پیار کرتے ہیں اْس سے کہیں زیادہ ہمارے دلوں میں اپنے پاک وطن کی محبت موجود ہے۔بلوچ پڑھے لکھے اور با شعور ہیں۔چند مفاد پرستوں کی وجہ سے بلوچوں کو دنیا کے سامنے جس طرح پیش کیا جاتا ہے ویسا کچھ ...

تفصیل پڑھیں

پیر مکّی کی درگاہ پر چند گھڑیاں

لاہور کا شمار دنیا کے سب سے قدیم اور اہم ترین شہروں میں کیا جاتا ہے۔ یہ شہر ثقافت کے ساتھ تاریخی حوالے سے بہت مشہور ہے ۔یہاں بزرگان دین کے بہت سے مزارات ہیں جہاں مخلوق خدا تسکین قلب کے لئے منتیں مانگنے آتی ہے اور زیارت کرکے فیض روحانیت حاصل کرتی ہے۔ روایت یہ ہے کہ شہر لاہور میں ...

تفصیل پڑھیں

پیر پنجا کاآب شفا

بلوچستان میں ایک ایسی جگہ بھی موجود ہے جہاں پہ ہزاروں لوگ روزانہ میلوں سفرطے کرکے پہنچتے اور وہاں کا پانی پینا اپنے لئے باعث شفا سمجھتے ہیں، لیکن اس جگہ کے بارے میں بہت کم لوگ جانتے ہیں۔ یہ ایک ایسی جگہ ہے جس پہ کبھی کسی نہیں لکھا حتٰی کہ گوگل بھی اس جگہ کے بارے میں نہیں جانتا ہے ...

تفصیل پڑھیں

سندھ یونیورسٹی جام شورو کا بے بس شاہکارمجسمہ

مجھے یقین ہوچلا ہے کہ ہم سب بدذوق لوگ ہیں ۔فن کی قدر کرنا نہیں جانتے۔فن سے ثقافت اور علم کا جھرنا پھوٹتا ہے تو فنکار کا سینہ خوشی سے سیراب ہوجاتا ہے۔ سندھ یونیورسٹی کیلئے بنائے گئے ایک خوبصورت مجسمے کو دیکھتا ہوں تو بہت افسوس ہوتا ہے کہ یونیورسٹی طلبا اس کے ساتھ کیسا کھلواڑ ...

تفصیل پڑھیں

بی بی نانی کی زیارت گاہ

زندگی کے بعض سفر ایسے بھی ہوتے ہیں جن میں نہ تو پاؤں تھکتے ہیں، نہ دل بیزار ہوتا ہے۔ بلکہ دھیرے دھیرے سے منزل کی جانب بڑھتے ہوئے قدم اس راستے پر ہی چلتے رہنا چاہتے ہیں۔میرایہ سفر جس مقام کی جانب جاری تھا، وہاں ہر سال ہزاروں عقیدت مند آتے ہیں۔ جی ہاں بولان پاس میں پیر غائب کا ...

تفصیل پڑھیں

بلوچستان میں مردم شماری پر تحفظات

الحمداللہ بلوچستان میں تمام ترخطرات و تحفظات کے باوجود ملکی مفاد کے لئے خانہ و مردم شماری کا آغاز کر دیا گیا ہے ۔پاکستان میں آخری مرتبہ مردم شماری 19سال قبل 1998میں کروائی گئی تھی تاہم اب یہ وقت آن پہنچا ہے دوبارہ 15 مارچ سے شروع ہونے والا کام 25 مئی تک مکمل ہوجائے گا۔یہ سلسلہ 2 ...

تفصیل پڑھیں

انگریز کے وفادار چین کے وفادار کیسے بن پائیں گے

وزیر اعظم پاکستان میاں نواز شریف نے گوادر میں خطاب کے دوران بلوچستان کو پاکستان کی تقدیر سے منسوب کرتے ہوئے اسے ٹائیگر آف پاکستان کا نام دیا اور یہاں یونیورسٹی اور ہسپتال بنانے کا اعلان کرتے ہوئے ایک ارب روپے کی گرانٹ کی منظور دی ہے۔اس میں کوئی شک نہیں کہ گوادر اور سی پیک ...

تفصیل پڑھیں