’جب تک کفیل غیر ملکیوں کی ایک ایک پائی ادا نہیں کردیتے تب تک۔۔۔‘ سعودی بادشاہ شاہ سلمان نے بڑا اعلان کردیا، پریشان حال غیر ملکیوں کے دل کی بات کہہ دی

عرب دنیا

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی عرب میں پھنسے بے یارو مدد گار غیر ملکیوں کی آہ و بکا بالآخر رنگ لے آئی اور سعودی فرمانرواشاہ سلمان کی جانب سے حکم جاری کر دیا گیا ہے کہ جب تک مصائب کے شکار غیر ملکیوں کے واجبات ادا نہیں ہو جاتے تب تک ذمہ دار کمپنیوں کو حکومت کی جانب سے کوئی ادائیگی نہیں کی جائیگی۔
عرب نیوز کی پورٹ کے مطابق وزیر محنت و سماجی ترقی مفرج الحقبانی کا کہنا تھا کہ شاہ سلمان کی جانب سے انہیں ہدایات جاری کر دی گئی ہیں کہ غیر ملکی ملازمین کو ملازمت فراہم کرنے والی کمپنیوں پر واضح کر دیا جائے کہ حکومتی ویج پروٹیکشن پروگرام کے تحت ان کی تنخواہیں ادا کی جائیں ، جبکہ ملازمین کی تنخواہیں ادا نہ کرنے والی کمپنیوں کو حکومت کی جانب سے ادائیگیاں بند کر دی جائیں اور اس وقت تک کوئی ادائیگی نہیں کی جائے گی جب تک کہ ملازمین کی رکی ہوئی تمام تنخواہیں ادا نہ کر دی جائیں۔

شاہ سلمان کا سعودی عرب میں پھنسے ملازمین کے مسائل حل کرنے کیلئے 10 کروڑ ریال کا اعلان
رپورٹ کے مطابق شاہی فرمان کے بعد ایسی تمام کمپنیوں کو حکومت کی جانب سے ادائیگیاں روک دی گئی ہیں کہ جنہوں نے اپنے ملازمین کو تنخواہیں ادا نہیں کی ہیں۔ اتوار کے روز شاہ سلمان کی جانب سے جاری کیے گئے ایک حکم میں وزیر محنت کو یہ اختیار بھی دیا گیا کہ وہ مسائل کے شکار غیر ملکی ملازمین کی رہائش سے متعلقہ مسائل کو بھی حل کریں۔ وزارت محنت کو یہ ہدایت بھی کی گئی ہے کہ واپسی کے خواہشمندملازمین کو ان کے ممالک واپس پہنچایا جائے جبکہ اس کے اخراجات ان کے کفیلوں وصول کیے جائیں۔ پاسپورٹ ڈیپارٹمنٹ کو بھی حکم جاری کر دیا گیا ہے کہ واپسی کے خواہشمند غیر ملکی ملازمین کو فائنل ایگزٹ ویزا جاری کیا جائے۔ سعودی فرمانرواکے احکام کی تعمیل کیلئے سعودی عرب فنڈ کے اکاﺅنٹ میں 10 کروڑ سعودی ریال جمع کروانے کا فیصلہ بھی ہو چکا ہے ۔