سعودی حکومت نے شہزادہ ولید بن طلال کو رہا کردیا؟ بڑی خبرآگئی

عرب دنیا

جدہ (ڈیلی پاکستان آن لائن)سعودی حکومت نے کرپشن کیخلاف مہم کے دوران گرفتار کیے گئے 208میں سے 7لوگوں کو رہا کردیاہے اور مقامی میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ رہاہونیوالوں میں کھرب پتی شہزادہ ولید بن طلال بھی شامل ہیں تاہم گلف نیوز نے کہاہے کہ رہاہونیوالے افراد میں کوئی شہزادہ یا وزیرشامل نہیں جبکہ گرفتار یا رہاہونیوالے افراد کے بارے میں مزید تفصیلات بھی جاری نہیں کی گئیں۔
تفصیلات کے مطابق سعودی اٹارنی جنرل شیخ سعود المعجب کے حوالے سے بتایاگیاکہ مجموعی طورپر 208افراد کو پوچھ گچھ کیلئے طلب کیاگیا جن میں سے سات افراد کو بری کردیاگیاتاہم انہوں نے رہاکیے گئے افراد کے بار ے میں مزید معلومات فراہم نہیں کیں ۔

مزید پڑھیں ۔ ۔ ۔ ۔وہ اہم ترین سعودی شہزادہ جو ملک سے بھاگ کر ایران جا پہنچا، یہ کون ہے؟ سب سے بڑی خبرآ گئی


پاکستانی میڈیا نے عرب میڈیا کے حوالے سے دعویٰ کیا کہ رہاءہونیوالوں میں سابق وزیرخانہ اور موجودہ وزیرمملکت ابراہیم العصف ، کھرب پتی شہزادہ ولید بن طلال ، شہزادہ ترکی بن نصر،رائل کورٹ کے سابق صدر خالدالتوارجی ،شہزادہ فہدبن عبداللہ،نیشنل گارڈ کے سابق وزیر شہزادہ متاب بن عبداللہ اور ان کے بھائی شامل ہیں تاہم گلف نیوز نے سعودی اخبار عکاظ کا حوالہ دیتے ہوئے واضح کیا ہے کہ کرپشن کیخلاف مہم کے دوران رہا ہونیوالوں میں نہ تو کوئی شہزادہ شامل ہے اور نہ ہی کوئی وزیر۔ رہاہونیوالے سات افراد کو ٹھوس شواہد کی عدم موجودگی کے باعث رہا کیاگیا۔