پاکستان پیپلزپارٹی کے زیر اہتمام بابر سہیل بٹ کے لئے تعزیتی ریفرنس

عرب دنیا

دبئی (طاہر منیر طاہر) حکومت پنجاب صوبہ میں امن عامہ کی صورتحال برقرار رکھنے میں ناکام ہوچکی ہے۔ دہشتگردی اور غندہ گردی کی وارداتیں عروج پر ہیں جبکہ پنجاب حکومت آنکھیں بند کرکے سوئی ہوئی ہے۔ اقرباءپروری اور زیادتی عام ہوچکی ہے۔ ایک غریب اور عام آدمی کی کہیں بھی نہیں سنی جارہی ہے۔ حکومتی غنڈے جب چاہتے ہیں اپنے مخالفین کو دبانے اور ختم کرنے کے لئے کسی بھی حد تک جاسکتے ہیں۔

ان خیالات کا اظہار پاکستان پیپلزپارٹی متحدہ عرب امارات و گلف ریجن کے رہنماﺅں نے گزشتہ روز پیپلزپارٹی یوتھ آرگنائزیشن کے جنرل سیکرٹری بابر سہیل بٹ کو بہیمانہ قتل پر منعقدہ ایک تعزیتی ریفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تعزیتی یفرنس کا اہتمام پی پی پی گلف ریجن کے سابق صدر میاں منیر ہانس نے کیا تھا جس میں قیصر گھمن، راشد چغتائی،ا نیس الرحمن، ملک اسلم، میاں عابد علی، شفیق صدیقی، سردار جاوید یعقوب، ذوالفقار مغل، اکرم شہزاد، چودھری مظہر اور دیگر متعدد کارکنوں نے شرکت کی۔

اس موقع پر مقررین نے تقاریر کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب میں آئے روز دہشتگردی کے واقعات ہوتے رہتے ہیں جس سے عوام الناس دہشتزدہ ہوکر اپنے آپ کو غیر محفوظ سمجھنے لگے ہیں، جب صرتحال ایسی ہوجائے تو ریاست ناکام تصور کی جاتی ہے۔ مقررین نے کہا کہ پنجاب حکومت نے اپنے مدمقابل آنے والوں پر ظلم کرنے کا سلسلہ شروع کررکھا ہے جس پر ہم کہتے ہیں کہ ”ظلم اتنا کرو جتنا برداشت کرسکو“۔ پی پی پی کے قائدین نے کہا کہ بابر سہیل بٹ پی پی پی کا ابھرتا ستارہ تھا جسے بجھادیا گیا ہے۔

بابر سہیل بٹ کے بہیمانہ قتل کا مقدمہ پنجاب حکومت اور وزیراعلیٰ پنجاب پر ہونا چاہیے۔ مقررین نے کہا کہ انصاف کے تقاضے پورے کئے جائیں اور بابر سہیل بٹ کے قاتلوں کو پکڑ کر انصاف کے کٹھہرے میں لایا جائے۔ تعزیتی ریفرنس میں مرحوم بابر سہیل بٹ کے لئے بخشش اور نفرت کی دعا کی گئی اور لواحقین سے اظہار ہمدردی کیا گیا۔