نیب نے ملک کا بیڑہ غرق کرنے کا ٹھیکہ لیا ہوا ہے: لاہور ہائیکورٹ

صفحہ آخر


لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہورہائیکورٹ کے جسٹس سیدمظاہرعلی اکبرنقوی جسٹس مسعود جہانگیر اورجسٹس عاطرمحمودپر مشتمل فل بنچ نے بہاؤالدین زکریا یونیورسٹی لاہور کیمپس کے طلباء کو عبوری طور پر ڈگریاں جاری کرنے کا حکم دے دیا ہے ،اس موقع پر فاضل بنچ نے ریمارکس دیئے کہ نیب نے ملک کا بیڑہ غرق کرنے کا ٹھیکہ لیا ہوا ہے، یونیورسٹی کے خلاف ناکارہ ریفرنس فائل کر کے کہتے ہیں نیب اچھا کام کر رہا ہے۔پیسہ اونٹوں پر لاد کر بیرون ملک بھجوایا جا سکتا ہے تو طالب علموں کا ریکارڈ ملتان سے لاہور کیوں نہیں لایا جا رہا۔عدالت نے یونیورسٹی کی جانب سے طلباء کی رجسٹریشن کے لئے این او سی کی لازمی شرط بھی ختم کر دی اور طلباء سے زبردستی این او سی لینے پر یونیورسٹی انتظامیہ کی سرزنش کرتے ہوئے واضح کیا کہ رجسٹریشن کے لئے این او سی کی بجائے پچاس روپے کے فارم پر حلف نامہ جمع کروایا جا ئے گا۔بہاؤالدین ذکریا یونیورسٹی کے غیرقانونی کیمپس کے خلاف درخواستوں پر سماعت کے دوران عدالتی حکم پر چیئرمین نیب قمر زمان، ڈی جی نیب ملتان، اٹارنی جنرل، صوبائی وزیر زعیم حسین قادری، پراسیکیوٹر جنرل پنجاب کے علاوہ طلباء کی بڑی تعداد پیش ہوئی، عدالت نے چیئر مین نیب کو مخاطب کرکے کہا کہ نیب نے ملک کا بیڑہ غرق کرنے کا ٹھیکہ لیا ہوا ہے، یونیورسٹی کے خلاف ناکارہ ریفرنس فائل کر کے کہتے ہیں نیب اچھا کام کر رہی ہے۔عدالت نے مزید قرار دیا کہ یہ ہزاروں بچوں کے مستقبل کا معاملہ ہے۔یہ عدالت کاکوئی ذاتی کیس نہیں، فل بنچ کے استفسار پر پراسیکیوٹر جنرل نیب کی ریفرنس مکمل کرنے کے لئے مہلت طلب کرتے ہوئے ہوئے یقین دہانی کرائی کہ کسی بھی ملزم کے ساتھ رعائیت نہیں برتی جا ئے گی،انہوں نے بتایا کہ اب تک دو خواتین سمیت 11ملزمان کے خلاف ریفرنس دائر کر دیا گیا ہے۔پراسیکیوٹر جنرل نیب نے عدالت کو آگاہ کیا کہ ان 11ملزمان کو عدالت عالیہ کی سنگل بنچ کے فیصلہ کی روشنی میں گرفتار نہیں کیا گیاجس پر عدالت نے استفسارکیا کہ اس فیصلے کو چیلنج کرنے سے آپ کوکس نے روکاہے۔چیئرمین نیب نے عدالت کو بتایا کہ ریفرنس سے متعلق تحقیقات جاری ہیں۔عدالت نے طالب علموں کی رجسٹریشن اور انرولمنٹ نہ کرنے پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ اگر آئندہ سماعت تک زیر تعلیم طالب علموں کی انرولمنٹ نہ ہوئی تو رجسٹرار کو تبدیل کر دیا جائے گا۔عدالت نے ریمارکس دیئے کہ کہ پیسہ اونٹوں پر لاد کر بیرون ملک بھجوایا جا سکتا ہے تو طالب علموں کا ریکارڈ ملتان سے لاہور کیوں نہیں لایا جا رہا۔عدالت نے کہا کہ یہ نیب یا عدالت کا مسلہ نہیں طالب علموں کے مستقبل کا معاملہ ہے۔عدالت نے ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کی سربراہی میں متعلقہ محکموں کو طالب علموں کے تمام مسائل حل کرنے کا حکم دے دیا،عدالت نے بہاؤلدین زکریان یونیورسٹی لاہور کیمپس سے امتحان پاس کرنے والے طالب علموں کو عبوری طور پر ڈگریاں جاری کرنے کا حکم دیتے ہوئے مزید سماعت 13فروری تک ملتوی کر دی ہے۔