کیپسول جیسا، نگلا جانے والا تھرمامیٹر

صفحہ آخر


پیرس(مانیٹرنگ ڈیسک)ایک وائرلیس تھرمامیٹر کیپسول کھا کر مریضوں کے جسم میں تیزی سے بدلتے درجہ حرارت کو نوٹ کرکے ان کی جانوں کو بچایا جاسکتا ہے۔اسے ’ای سیلسیئس‘ کا نام دیا گیا ہے جو عام دوائی کے کیپسول جیسا دکھائی دیتا ہے جو جسمانی درجہ حرارت میں کمی اور بیشی کو فوری طور پر نوٹ کرکے ڈاکٹروں کو خبردار کرسکتا ہے۔ ماہرین کے مطابق ’اسمارٹ کیپسول‘ ان مریضوں کے لیے بہت مفید ثابت ہوسکتا ہے جن کا قدرتی دفاعی (امنیاتی) نظام بہت کمزور ہوتا ہے اور وہ بار بار انفیکشن کے شکار ہوتے ہیں۔اس کے علاوہ طویل سرجری مثلاً اعضا کی منتقلی، دل کے آپریشن، کسی انتہائی نگہداشت میں بحالی اور شدید انفیکشن کے شکار افراد بھی اس سے فائدہ اٹھاسکیں گے۔ جسمانی ٹمپریچر نوٹ کرنے والا یہ ننھا نظام کیموتھراپی میں جسمانی درجہ حرارت کی تبدیلیوں کو بھی نوٹ کرے گا جو ممکنہ سائیڈ ایفیکٹس کو ظاہر کرتی ہیں۔