پاکستان میں جعلی کرنسی نوٹوں کی شرح خطے کے دیگر ممالک سے کم ہے

کامرس


کوئٹہ(اے پی پی)گورنر سٹیٹ بینک اشرف محمود وتھرا نے کہا ہے کہ معاشی بہتری میں نجی بینکوں کا اہم کردار رہاہے اور نجی بینکیں سٹیٹ بینک سے بھر پور تعاو ن کررہی ہے ،پاکستان میں جعلی کرنسی نوٹوں کی شرح خطے کے دیگر ممالک سے کم ہے ، سٹیٹ بینک کے امور ترجیح بنیادوں پر حل کیئے جارہے ہیں،صوبے میں قائم تمام بینکوں کو تین سالہ بزنس پلان تشکیل دینے کے احکامات جاری کردئیے ہیں اور موجودہ بینکوں کی برانچز اور اے ٹی ایم مشینوں کی تعداد بڑھانے کی ہدایات بھی جاری کردئیے ہیں۔ان خیالات کااظہار انہوں نے یہاں مقامی ہوٹل میں منعقدہ اجلاس اوربعدازاں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ہوااجلاس میں 22کمرشل بینکوں کے سربراہوں نے شرکت کی ۔اس موقع پر پی ڈی اے کے چیئرمین ،صدر اور سٹیٹ بینک کے دیگر اعلیٰ آفیسران بھی موجود تھے۔گورنر اسٹیٹ بینک نے کہا کہ تمام بینکوں کے صدور کو ہدایت جاری کی گئی ہے کہ بلوچستان کے تمام اضلاع میں برانچزکھولے جائیں تاکہ بینکنگ کے بزنس کو فروغ دیا جاسکے ،ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ بینک اور کھاتہ داروں میں قریبی روابط کو فروغ دینے کے لیے مزید اقدامات اٹھائے جارہے ہیں،بزنس اینڈ سمال انٹر پرائز زکی سہولتیں فراہم کی جائیں گی۔انہوں نے کہاکہ بے روزگاری میں کمی کے لیے اقدامات اٹھارہے جارہے ہیں،اس حوالے سے بلوچستان بھر کے تمام نجی بینکوں کو ہدایت جاری کی گئی ہے کہ وہ بینکوں میں مقامی اہل امیداواروں کو ترجیحی بنیادوں پر تعینات کریں۔ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اقتصادی اورمعاشی ترقی کیلئے نجی بینک سٹیٹ بینک سے بھر پور تعاون کر رہے ہیں ۔ایک سوال پر انہوں نے کہاکہ پاکستان میں جعلی کرنسی نوٹوں کی شرح خطے کے دیگر ممالک سے کم ہے ملک میں مختلف چیمبرز آف کامرس کے عہدیداروں سے مل کر معاشی ترقی کے لیے پالیساں مرتب کرینگے ۔