دبئی میں پاکستانی شہری نے ہم وطن کو اپنی بیگم کیساتھ گفتگو کرتے دیکھ لیا، قتل کردیا

جرم و انصاف

دبئی سٹی (ڈیلی پاکستان آن لائن)متحدہ عرب امارات میں پاکستانی شہری نے اپنے ہم وطن شہری کو اپنی بیگم سے بات کرتے ہوئے دیکھ لیا جس پر طیش میں آکر فوری اس کی جان لے لی تاہم ملزم نے قتل کے الزام کی تردید کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ مقتول نے حملہ کی کوشش کی تواس نے اپنا دفاع کرنے کی کوشش کی ۔
خلیج ٹائمز کے مطابق ایک مال کے کچن میں کام کرنیوالے 27سالہ اسسٹنٹ کک نے اپنے ساتھی کو مبینہ طورپر اپنی بیوی سے گفتگو کرتے سن کر موت کے گھاٹ اتار دیا، چھری سے چھاتی اور را ن پر وار کیے جس سے وہ موقع پر ہی دم توڑ گیا۔
31سالہ نیپالی سیکیورٹی گارڈ نے بتایاکہ ’میں فوڈ کورٹ میں اپنی ڈیوٹی پر تھا جب سپروائزر نے کال کرکے معاملے سے آگاہ کیا ، پھر میں نے دیگر ورکرز کو ملزم کا پیچھا کرتے دیکھا اور اپنے ساتھیوں کی مدد سے اسے پکڑنے میں کامیاب ہوگئے ، ملزم ڈرا ہواتھا اور کہہ رہاتھا کہ ملزم نے اس کی اہلیہ کی توہین کی اور اسے بتارہاتھا کہ اس کے وطن واپس آتے پر ایک شخص اسے قتل کردے گا‘۔
پولیس کے مطابق 22دسمبر 2016ءکو ہونیوالے اس واقعے کا علم انہیں شام سواچار بجے ہوا ، موقع پر پہنچ کر دیکھاتو الممزار کے علاقے میں ریسٹورنٹ کے فرش پر لاش پڑی تھی اور چھاتی میں زخم تھے جبکہ ملزم کو کچھ سیکیورٹی گارڈز نے پکڑ لیا تھا۔ پولیس افسر نے عدالت کو بتایاکہ ’ملزم پریشان اور چلا رہاتھا، ملزم نے اعتراف کرتے ہوئے بتایاکہ اس نے ایک سے زائد وار کیے اور غصے میں تھا کیونکہ ملزم پاکستان میں اس کی اہلیہ سے بات کرکے اس کے معاملات میں مداخلت کررہاتھاجبکہ وہ پہلے ہی اسے ان معاملات سے باز رہنے کا کہہ چکا تھا۔
48سالہ مقتول پاکستان حملے کے وقت کچن میں موجود اور ویڈیو کال میں مصروف تھا جبکہ ملزم چائے بنارہاتھا ۔مقتول نے جب کسی کا نام تیسری مرتبہ لیا تو ملزم طیش میں آگیا اورچھری اٹھا کر مقتول کی گردن پر دے ماری اور پھر پے درپے وار شروع کردیئے، اس کے بعد کچن کے پچھلے دروازے سے بھاگ کھڑا ہوالیکن بالآخرگراﺅنڈ فلورپر پکڑاگیا۔عدالت نے مزید سماعت 22مارچ تک ملتوی کردی۔