خوبصورتی محنت کش بہنوں کیلئے وبال جان بن گئی،ایک بہن قتل ، دوسری کی زبردستی شادی، گردوہ نکال لیاگیا

جرم و انصاف

لاہور، رائے ونڈ (ویب ڈیسک)چھانگا مانگا کی رہائشی غریب بھٹہ مزدور عیسائی خاتون حاجراں بی بی کی بیٹیوں ممتاز بی بی، رضیہ بی بی اورصفیہ بی بی کی خوبصورتی خاندان والوں کی جان اور عزت کی دشمن بن گئی۔ غریب محنت کش ضعیف خاتون کئی بھٹوں پر ظلم و زیادتی اور عزت پر حملوں کے بعد رائے ونڈ میں پناہ لینے کیلئے آگئی۔ شوہر نذیر مسیح غم سے فالج میں مبتلاہیں۔ ماں‘ تین بیٹیاں، دو بیٹے شہزاد اوراللہ دتہ عرصہ دراز تک بھٹہ خشت مالکان کے ظلم کا شکار رہے۔ ایک بیٹی رضیہ بی بی زیادتی کے بعد قتل کردی گئی۔ ممتاز بی بی کی زبردستی شادی کرکے اس کا گردہ نکال کر بیچ ڈالا گیا۔ صفیہ بی بی سے شادی کے عوض چند ٹکے دیکر اس وقت تک حاملہ خاتون سے بھٹہ خشت پر بے انتہا مزدوری کروائی جارہی ہے۔

روزنامہ خبریں کے مطابق حاجراں بی بی عرصہ دراز سے قصور کے تھانوں اور حکام کے دفاتر میں انصاف کیلئے دربدر ہے اور اس کے پاس درخواستوں کا انبار ہے، لیکن اس کی کہیں بھی شنوائی نہیں ہوئی ، بلکہ بااثر افراد نے اس خاتون کے خلاف جھوٹی درخواستیں دے کر اس کو انصاف سے محروم کردیا ۔  مظلوم اور بے کس خاتون حاجراں بی بی بھٹہ مالکان گل فراز ساکن ظفر کے ملازمین منشی، جمعہ دار ، کالو کمہار، وارث وغیرہ کے ظلم و ستم پر مبنی قید سے فرار ہوکر وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کے شہر میں پناہ لینے پر مجبور ہوگئی۔ اس نے فریاد کی کہ اگر وزیراعلیٰ نے ملاقات کا وقت نہ دیا تو بیٹے کے ہمراہ نوازشریف فارم کے سامنے خودسوزی کر لے گی۔