’میرے سابق شوہر نے اپنے دوست کے ساتھ مل کر ہماری بیٹی کو جنسی درندگی کا نشانہ بناڈالا اور پھر ۔۔۔‘ رمضان المبارک میں خاتون اپنے سابق شوہر کیخلاف ایسی درخواست لے کر عدالت پہنچ گئی کہ شیطان بھی شرما جائے

جرم و انصاف

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن )خاتون نے لاہور سیشن کورٹ میں درخواست جمع کروائی جس میں اس نے اپنے سابق شوہر پر الزام عائد کیاہے کہ میرے سابق شوہر نے اپنے دو ست کے ساتھ مل کر ہماری بیٹی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا دیا ہے۔
تفصیلات کے مطابق خاتون نے لاہور سیشن کورٹ میں درخواست کی ہے کہ اس معاملے کی تحقیقات کروائی جائیں ۔پٹیشن میں کہاہے گیاہے کہ مبینہ متاثرہ لڑکی نے فون کر کے بتایا کہ اسے دو افراد نے زیادتی کا نشانہ بنایاہے ،جن میں سے ایک اس کا باپ ہے ،اور اس کے بعد خاتون نے جب سبزا زار پولیس سٹیشن میں شکایت درج کروانے کیلئے رابطہ کیا تو وہاں اس کی بات کسی نے نہیںسنی ۔
خاتون کا کہناتھاکہ اس کا شوہر چاہتا تھا کہ میں جسم فروشی کا کاروبار کروں لیکن میں نے انکار کر دیا جس پر اس نے مجھے گھر سے نکال دیا ۔خاتون کا کہناتھا میں بہت غریب ہوں اور میرا شوہر نشے کا عادی تھا ،وہ مجھے مار کر اور ڈرا کر اس کاروبار میں دھکیلنا چاہتا تھا لیکن میں نے کسی طور پر رضامندی ظاہر نہیں کی اور جب اسے یقین ہو گیا کہ یہ نہیں مانے گی تو اس نے مجھے گھر سے دھکے دے کر گھر سے نکال دیا اور میری دو بیٹیوں کو بھی میرے ساتھ جانے نہیں دیا ۔
خاتون کا کہناتھا کہ وہ غریبی کے باعث اپنی بیٹیوں کا خیال نہیں رکھ سکی ،میرا شوہر بیٹیوں سے ملنے کی اجازت بھی نہیں دیتا تھا اور انہیں سکول جانے کی اجازت بھی نہیں دیتا تھا ،میرے شوہر نے بیٹیوں کو ایک کمرے میں قید کر کے رکھاہے۔کچھ روز قبل میری بیٹی نے کسی طریقے سے مجھے فون کر کے بتایا کہ ’میرے باپ اور اس کے دوست نے مجھے جنسی زیادتی کانشانہ بنایاہے ‘۔
خاتون کا کہناتھا کہ جب میں شکایت درج کروانے کیلئے سبزازار تھانے میں گئی تووہاں کسی نے بھی اس کی بات نہیں سنی اور کوئی ایکشن لینے سے انکار کر دیا ،خاتون نے عدالت سے رجوع کی اس کے شوہر کیخلاف ریپ کا مقدمہ درج کیا جائے اور اس کی بیٹیوں کو اس کی قید سے رہا کروایا جائے ۔