’ یہاں پر ہم لڑکیوں کو یہ سکھاتے ہیں کہ وہ کس طرح مردوں کو ۔۔۔‘ دنیا کا متنازع ترین سکول، کیا کام سکھایا جا رہا تھا؟ جان کر مرد بھی ہکے بکے رہ جائیں

ڈیلی بائیٹس

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک) چینی حکام نے اپنے ملک کا ایک سکول بند کر دیا ہے جو خواتین کو ایسی تعلیم دے رہا تھا کہ آپ کے لیے یقین کرنا مشکل ہو جائے گا۔ برطانوی نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق یہ سکول خواتین کو مردوں کا فرماں بردار رہنے اور ان کا ہر جائز و ناجائز حکم ماننے کی تعلیم دیا کرتا تھا۔ چینی ایجوکیشن بیورو کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ”سکول کا دعویٰ تھا کہ وہ خواتین کو چین کی روایتی اچھائیاں سکھاتا ہے لیکن حقیقت میں وہ ہماری کئی بنیادی سماجی روایات کی خلاف ورزی کر رہا تھا جس پر اسے بند کر دیا گیا ہے۔“
رپورٹ کے مطابق اس سکول کے اساتذہ کے لیکچرز پر مبنی کئی ویڈیوز منظرعام پر آئی ہیں جن میں وہ صنفی مساوات کے خلاف بول رہے ہوتے ہیں اور خواتین کو نصیحت کر رہے ہوتے ہیں کہ اگر مرد ان پر تشدد بھی کریں تو انہیں اس پر کوئی ردعمل نہیں دینا چاہیے، بلکہ خاموشی سے اس تشدد کو برداشت کریں۔تمہارا شوہر تم سے جو کچھ بھی کہے تمہارا جواب ’ہاں‘ میں ہونا چاہیے۔اس کے علاوہ ان لیکچرز میں خواتین کو سکھایا جا رہا تھا کہ کسی بھی صورت میں اپنے شوہر سے طلاق نہیں لینی چاہیے۔ اس سکول کی کئی شہروں میں برانچیں تھیں جن میں خواتین کو گھریلو کام کاچ اور صفائی ستھرائی بھی سکھائی جاتی تھی۔