چوہوں کی نسل ختم کرنے کا فیصلہ، سائنسدانوں نے ان سے مردانگی ہی چھیننے کا فیصلہ کرلیا، مگر کیسے؟ ناقابل یقین طریقہ سامنے آگیا

ڈیلی بائیٹس

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) مچھر، مکھیاں، چوہے اور دیگر ایسے حشرات اور جانور، انہیں روکنے کے تمام تر اقدامات کے باوجود یہ ہماری ناک میں دم کیے رہتے ہیں۔ تاہم اب سائنسدانوں نے ان کا ایسا جدید ترین حل نکال لیا ہے کہ سن کر آپ دنگ رہ جائیں گے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق سائنسدان جدید ٹیکنالوجی کے ذریعے انسانوں کو تنگ کرنے والے حشرات اور جانوروں کے ڈی این اے میں ایسی تبدیلیاں کررہے ہیں جو ان کی نسل کو محدود یا ختم کر دیں گی۔ آسٹریلیا میں سائنسدان پہلے ہی ایسے مچھر پیدا کر رہے ہیں جو بانجھ ہیں اور اپنی نسل نہیں بڑھا سکتے۔

’میں جب 11سال کی تھی تو میرے والدین میری شادی میرے سے کئی سال بڑے مرد سے کروانا چاہتے تھے لیکن پھر ایک مرغی نے میری زندگی بچالی‘
اب برطانیہ کی یونیورسٹی آف ایڈنبرا سائنسدانوں نے بانجھ چوہوں کی تیاری پر کام شروع کر رکھا ہے۔ یہ چوہے یا تو افزائش نسل کی صلاحیت سے بالکل محروم ہوں گے یاپھر صرف نر ہی پیدا کریں گے جس سے مادہ چوہوں کی کمی واقع ہو جائے گی اور ان کی نسل ختم ہو جائے گی۔ تحقیقاتی ٹیم کے رکن گس مک فرلین کا کہنا تھا کہ ”اس تحقیق میں سی آر آئی ایس پی آر/سی اے ایس 9نامی تکنیک کے ذریعے چوہوں کے ڈی این اے میں تبدیلی کی جا رہی ہے اور ان کی بانجھ نسل پیدا کی جا رہی ہے۔ یہ بانجھ چوہے قدرتی ماحول میں چھوڑے جائیں گے تاکہ دیگر چوہوں کے ساتھ مل کر نسل میں کمی کا باعث بنیں۔“

ڈیلی پاکستان کے یو ٹیوب چینل کو سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں