قیامت کی نشانی! سگے ماں اور بیٹے نے ایسا اعلان کر دیا کہ جان کر کوئی بھی توبہ پر مجبور ہو جائے

ڈیلی بائیٹس

نیویارک (نیوز ڈیسک) مغرب میں اخلاقی بے راہ روی کوئی عجب بات نہیں سمجھی جاتی مگر ایک ماں اور بیٹے کی بے حیائی نے ایسی بلندیوں کو چھو لیا کہ مغربی معاشرہ بھی ہل کر رہ گیا۔ بے راہروی کی یہ شرمناک مثال 51 سالہ خاتون کم ویسٹ اور اس کے 32 سالہ بیٹے بین فورڈ نے قائم کی ہے۔
اخبار دی مرر کے مطابق کم ویسٹ اور بین فورڈ تقریباً 2 سال سے ازدواجی تعلقات استوار کئے ہوئے ہیں۔ وہ ناصرف اپنے اس تعلق پر شرمندہ نہیں ہیں بلکہ اسے محبت کی انتہا قرار دیتے ہیں، اور اب انہوں نے تمام تر تنقید اور مخالفت کو نظر انداز کرتے ہوئے اولاد پیدا کرنے کا اعلان بھی کردیا ہے۔

’جنت‘ میں لی گئی سیلفیاں برائے فروخت
اخبار نیوڈے سے بات کرتے ہوئے اس جوڑے نے اپنے تعلق کے بارے میں انتہائی شرمناک تفصیلات سے پردہ اٹھایا۔ لندن سے تعلق رکھنے والی کم ویسٹ کے ہاں بین فورڈ کی پیدائش تقریباً 30 سال قبل ہوئی۔ اس نے بچے کی پیدائش کے ایک ہفتے بعد ہی اس کی ذمہ داری اٹھانے سے انکار کردیا، جس کے بعد ایک امریکی خاندان نے اسے گود لے لیا۔ بین فورڈ نے اپنی عمر کے 30 سال امریکا میں گزارے اور جوان ہونے پر وکٹوریہ نامی ایک لڑکی سے شادی کرلی۔
تقریباً دو سال قبل بین نے اپنی ماں کو ایک خط لکھا اور ملنے کی خواہش کا اظہار کیا۔ پہلی ملاقات میں ہی دونوں نے شراب کے نشے میںدھت ہو کر ماں اور بیٹے کے مقدس رشتے کو پامال کر دیا۔ بین کا کہنا ہے کہ اسے ابتدائی طور پر دل پر کچھ بوجھ محسوس ہوتا تھا لیکن جب اس نے انٹرنیٹ پر کچھ معلومات تلاش کیں اور اسے پتہ چلا کہ اس طرح کے واقعات پہلے بھی سامنے آتے رہے ہیں تو وہ مطمئن ہو گیا۔
بین اور کم کا کہنا ہے کہ ان کا تعلق ”جینیاتی جنسی کشش“ کہلاتا ہے اور وہ اسے خلاف فطرت قرار نہیں دیتے۔ ماں سے تعلق استوار کرنے کے بعد بین نے اپنی اہلیہ وکٹوریہ سے علیحدگی اختیار کرلی ہے اور اب دونوں ماں بیٹا امریکا میں مقیم ہیں۔ کم نے اخبار سے بات کرتے ہوئے کہا ”مجھے پتہ ہے لوگ اسے غلط کہیں گے اور ہم سے نفرت کریں گے لیکن ہم ناصرف ایک ہوچکے ہیں بلکہ اولاد پیدا کرنے کی خواہش بھی رکھتے ہیں۔ چاہے جتنی بھی مخالفت ہو اور کوئی ہم سے کتنی بھی نفرت کرے ہم اپنے فیصلے سے پیچھے نہیں ہٹیں گے۔“