شادی کی تقریب کی منصوبہ بندی کے دوران ایک موضوع ایسا آگیا کہ سارے ارمان مٹی میں مل گئے، سعودی جوڑے کی شادی ہی ٹوٹ گئی، جان کر آپ کو بھی بے حد افسوس ہوگا

ڈیلی بائیٹس

ریاض(مانیٹرنگ ڈیسک)انگریزی کی ایک کہاوت ہے کہ ”جب غربت دروازے سے اندر داخل ہوتی ہے تو پیار کھڑکی سے باہر اڑ جاتا ہے۔“ ایسا ہی کچھ گزشتہ دنوں سعودی عرب میں دیکھنے کو ملا جہاں ایک جوڑا شادی کرنے جا رہا تھا اور اپنی شادی کی تقریب کی تیاریوں میں لگا ہوا تھا۔ تقریب کی سجاوٹ کے لیے انہوں نے شادی کی تقریبات کے انتظامات کرنے والے ایک شخص کو اپنی شادی کی تقریب کی سجاوٹ کے لیے کہا اوراس کے اخراجات کا حساب کتاب لگانے کی کوشش کی۔ اس شخص نے انہیں 40ہزار ریال (تقریباً11لاکھ 12ہزار روپے)کا بل بتا دیا۔ اب اس بل پر لڑکے اور لڑکی میں بحث چھڑ گئی کیونکہ لڑکا اتنے بھاری بل کی ادائیگی کے لئے تیار نہ تھا۔ بحث جھگڑے پر منتج ہوئی اور بالآخر دونوں کی شادی ہی ٹوٹ گئی۔
عرب نیوز کی رپورٹ کے مطابق ویڈنگ پلانرخالد الشرحان کا کہنا تھا کہ لڑکا اور لڑکی میرے پاس آئے اوردلہن نے تقریب کے لیے اپنی پسند کی اشیاءمنتخب کیں۔ جب بل 40ہزار ریال تک جا پہنچا تو دلہا غصے میں آ گیا ، شاید وہ اتنے اخراجات برداشت نہیں کر سکتا تھا۔ اس نے غصے میں دلہن سے کہا کہ ان کا بل تم ادا کرو۔ اس پر دونوں میں جھگڑا شروع ہو گیا اور لڑکے نے غصے میں پیچ و تاب کھاتے ہوئے وہیں لڑکی کو شادی سے انکار کیا اور اپنی گاڑی میں بیٹھ کر روانہ ہو گیا جبکہ لڑکی وہیں کھڑی منہ دیکھتی رہ گئی۔اور بعد میں ٹیکسی لے کر وہاں سے روانہ ہوئی۔“