’کمپیوٹر پر یہ لفظ لکھا آرہا ہے، اس کا مطلب کیا ہے؟‘ مسافر جہاز کی تباہی سے چند لمحے پہلے پائلٹ کی گفتگو ریکارڈ، اپنے ماتحت سے کس آسان ترین لفظ کا مطلب پوچھ رہا تھا؟ ایسا انکشاف کہ دنیا دنگ رہ گئی

ڈیلی بائیٹس

بیجنگ (نیوز ڈیسک)کسی فضائی حادثے کی ذمہ داری پائلٹ پر عائد ہونا کوئی اچنبھے کی بات نہیں، لیکن 1993ءمیں چینی ناردرن ائیرلائنز کی پرواز 6901 کے پائلٹوں سے ایسی غلطی سرزد ہوئی کہ جس کی کوئی دوسری مثال ہوابازی کی تاریخ میں آج تک نہیں دیکھی گئی ۔

نوازشریف کارکن سے پوچھیں دوسرے کو غدار کہنے کا حق کس نے دیا؟دونوں کارکنان کیخلاف کارروائی ہونی چاہیے:سینیٹر زاہد خان

وکی پیڈیا کی رپورٹ کے مطابق 13 نومبر 1993 کے روز میکڈونل ڈگلس MD-82 طیارہ 102 مسافروںکو لے کر بیجنگ کے کیپیٹل انٹرنیشنل ائیرپورٹ سے ارومکی ڈووپو انٹرنیشنل ائیرپورٹ کے لئے روانہ ہوا تھا۔جب یہ طیارہ لینڈنگ کے لئے ارومکی ائیرپورٹ کی طرف بڑھ رہا تھا تو پراسرار طور پر حادثے کا شکار ہو گیا، جس کے نتیجے میں 12مسافروں کی موت ہوئی۔ جب تحقیقات کی گئیں توکاک پٹ وائس ریکارڈر کی ریکارڈنگ سے معلوم ہوا کہ ائیرپورٹ کی جانب بڑھت ہوئے طیارے کا آٹو پائلٹ خود کار طریقے سے منقطع ہوگیا۔ پائلٹ نے اسے دوبارہ آن کرنے کی کوشش کی اور جب یہ دوبارہ آن ہوا تو 800 فٹ فی منٹ سیٹنگ کے ساتھ VERT SPD موڈ پر سیٹ ہوگیا۔ جب طیارہ تیزی کے ساتھ نیچے آنے لگا تو آٹو میٹک وارننگ سسٹم نے ”PULL UP“ کی وارننگ جاری کرنا شروع کردی۔ طیارے کی بلندی خطرناک حد تک کم ہونے کی صورت میں وارننگ سسٹمز خود کار طریقے سے یہ وارننگ جاری کرنا شروع کردیتا ہے، جس کا مطلب یہ ہوتا ہے کہ طیارے کو فوری طور پر اوپر اٹھایا جائے۔
تحقیقات کے دوران حیرتناک انکشاف ہوا کہ چینی پائلٹ اس سادہ اور واضح وارننگ کو سمجھنے سے قاصر تھے۔ انگریزی زبان میں ان کی مہارت کا یہ عالم تھا کہ طیارے کا کپتان، فرسٹ آفیسر سے پوچھ رہا تھا کہ PULL UPکا کیا مطلب ہے۔ دوسری جانب فرسٹ آفیسر کا حال بھی کچھ زیادہ مختلف نہ تھا۔ اس نے جواب دیا ”مجھے معلوم نہیں۔“ دونوں کی لاعلمی کا نتیجہ یہ ہوا کہ وارننگ کو نظر انداز کردیا گیا اور طیارہ تیزی سے زمین کی جانب بڑھتا ہوا بجلی کی تاروں اور ایک دیوار کے ساتھ ٹکراتا ہوا کھیتوں میں جاگرا۔ فضائی حادثے کی کوئی اور ایسی مثال دوبارہ کبھی دیکھنے میں نہیں آئی۔