اگر کسی جگہ ایٹمی حملہ ہو اور اس کے بعد وہاں یہ پھول کاشت کیا جائے تو یہ زمین سے تمام تابکاری اثرات ختم کردیتا ہے، سائنسدانوں کا ایسا انکشاف کہ آپ بھی قدرت پر عش عش کر اُٹھیں گے

ڈیلی بائیٹس

ٹوکیو(مانیٹرنگ ڈیسک) جاپان کے شہروں ہیروشیما اور ناگاساکی پر امریکہ نے ایٹم بم گرائے تو اس سے لاکھوں لوگ لقمہ اجل تو بنے لیکن ایٹمی تابکاری نے ان کی زمین کوبنجر بنا دیا جہاں دہائیوں تک گھاس تک نہ اگ سکی۔ اب سائنسدانوں نے وہاں ایک تجربے کے بعد سورج مکھی کے پھول کا ایسا فائدہ بتادیا ہے کہ جان کر آپ قدرت پر عش عش کر اٹھیں گے۔ ویب سائٹ گارڈن کالج ڈاٹ کام کی رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں نے ہیروشیما اور ناگاساکی میں سورج مکھی کے کھیت اگائے جنہوں نے حیران کن طور پر زمین میں موجود تابکاری اثرات کو ختم کر دیا۔

وہ کام ہوگیا جو پچھلے 3 کروڑ سال میں نہ ہوا تھا، دنیا کی بقاءہی خطرے میں پڑگئی، سب سے تشویشناک خبر آگئی
ایک دہائی طویل اس تحقیق میں تجرباتی وقت کے بعد سائنسدانوں نے زمین کا دوبارہ تجزیہ کیا تو معلوم ہوا کہ اس میں تابکاری مواد اور زہریلی دھاتیں 43فیصد کم ہو گئی تھیں اور اس زمین اور فضاءمیں آلودگی کا لیول سیفٹی معیار سے نیچے آ گیا تھا۔سائنسدانوں نے رپورٹ میں لکھاہے کہ سورج مکھی کا پھول ماحولیات کے لیے اس قدر بہترین ہے جتنا یہ دیکھنے میں خوبصورت نظر آتا ہے۔یہ زمین میں موجود تابکاری اثرات اور زہریلی دھاتوں کو اپنی طرف کھینچنے اور انہیں اپنے ٹشوز میں جذب کرلینے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ان میں زنک، تانبا اور دوسری دھاتیں موجود ہیں جو زمین اور فضاءکو آلودہ کرتی ہیں۔