پاکستانی گاﺅں میں محنت کش کی اس نوجوان لڑکی نے وڈیرے کی خواہش پر اس سے شادی سے انکار کردیا گیا تو اس کے ماں باپ کے سامنے اس کے ساتھ کیا کام کردیا گیا؟ جان کر ہر پاکستانی کا دل خون کے آنسو روئے

ڈیلی بائیٹس

سیہون(مانیٹرنگ ڈیسک) سندھ کے شہر سیہون میں ایک اور حوا کی بیٹی ایک منہ زور وڈیرے کی حیوانیت کی بھینٹ چڑھ گئی ہے، اور ہمیشہ کی طرح اس بے کس کا بھی قصور صرف یہ تھا کہ وہ ایک غریب محنت کش کی بیٹی تھی، جس کا باپ طاقت کے نشے میں دھت ظالم وڈیرے کا ہاتھ پکڑنے کی سکت نہیں رکھتا تھا۔


ویب سائٹ پڑھ لو کی رپورٹ کے مطابق دسویں جماعت کی طالبہ تانیہ کے رشتے کےلئے ایک مقامی وڈیرہ اس کے والدین پردباﺅ ڈال رہا تھا مگر لڑکی اس رشتے کے لئے تیار نہ تھی۔ اس کے انکار نے ظالم وڈیرے کو مشتعل کر دیا اور وہ بدمعاشی اور بے حیائی کی ہر حد پھلانگتے ہوئے زبردستی لڑکی کے گھر میں داخل ہوا اور اسے گولی مار کر ہلاک کر دیا۔ اس حیوان صفت شخص کی سفاکی کا اندازہ کیجئے کہ اس نے نوعمر لڑکی کو اس کے والدین کے سامنے گولی مار کر ہلاک کیا۔


مقتولہ کے والدین اس اندوہناک سانحے پر غم سے نڈھال ہیں اور انصاف کی اپیل کر رہے ہیں۔ بدقسمتی سے یہ اس نوعیت کا پہلا واقعہ ہے نہ آخری، اور ہمیشہ کی طرح اس کیس میں بھی پولیس نے ملزم کے خلاف کاروائی کا دلاسہ تو دیا ہے لیکن تاحال کوئی قابل ذکر پیش رفت نہیں ہو سکی۔