’ماں میں خود کشی کررہی ہوں کیونکہ میرے اپنے ہی شوہر نے مجھے۔۔۔‘ نئی نویلی دلہن نے خود کشی کرلی اور جاتے جاتے اپنی ماں کے نام ویڈیو میں ایسی بات کہہ دی کہ پوری دنیا کو رُلا کر رکھ دیا

ڈیلی بائیٹس

نئی دلی (نیوز ڈیسک) سسرالیوں کے ظلم کی ستائی ایک نوجوان بھارتی لڑکی نے اپنی زندگی کا خاتمہ کرلیا، لیکن موت کو گلے لگانے سے پہلے آخری ویڈیو میں اپنی ماں سے کچھ ایسے دردناک انداز میں مخاطب ہوئی کہ ساری دنیا کو رلا دیا ہے۔
دی مرر کی رپورٹ کے مطابق 20 سالہ انجم فیضان کے سسرال والوں نے کم جہیز لانے پر اس کی زندگی عذاب کررکھی تھی۔ مزید افسوسناک بات یہ کہ اس کا خاوند اسے تحفظ دینے کی بجائے اس پر ظلم کرنے میں سب سے آگے تھا۔ جب وہ ان کے شرمناک مطالبات پورے کرنے میں ناکام ہوگئی تو لالچی خاوند نے اسے اپنے گھر سے ہی نکال دیا۔

’میں اپنے دوست کے گھر پر تھا کہ اوپر والی منزل سے چیخنے کی آواز آئی، وہاں گئے تو دیکھا ایک نوجوان لڑکی برہنہ حالت میں پڑی تھی جس کے۔۔۔‘ پاکستانی نوجوان نے انتہائی شرمناک واقعہ سنادیا، یہ لڑکی دراصل کون تھی؟ جان کر آپ کے بھی رونگٹے کھڑے ہوجائیں گے
بدنصیب لڑکی نے حالات سے دلبرداشتہ ہو کر خود کشی کا فیصلہ کر لیا اور انتہائی قدم اٹھانے سے پہلے اپنی آخری ویڈیو ریکارڈ کی۔ اس ویڈیو میں وہ اپنے دل کا دکھ اپنی ماں سے بیان کرتی ہے اور پھر اس سے معافی مانگ کر پھندے سے جھول جاتی ہے۔و ہ کیمرے کے سامنے بتاتی ہے کہ اس کا خاوند عارف اس پر تشدد کرتا تھا اور اس کے دیگر عزیز بھی اس کے ساتھ انتہا درجے کی بدسلوکی کرتے تھے۔ وہ اپنی ماں سے درخواست کرتی ہے کہ وہ اسے معاف کردے اور دعا کرتی ہے کہ اللہ اس کی ماں کو اپنی حفاظت میں رکھے۔ اس کے بعد وہ کھڑی ہوتی ہے اور گلے میں پھندا ڈال کر جھول جاتی ہے۔


لڑکی کے والد کی جانب سے پولیس کو دی گئی درخواست میں کہا گیا ہے کہ سسرال والے اس کی بیٹی کو ذہنی اور جسمانی تشدد کا نشانہ بناتے تھے۔ اس کا خاوند نئی موٹرسائیکل کا تقاضا کرتا تھا اور والدین سے رقم لانے کو بھی کہتا تھا۔ اس کی ساس اور نند جہیز نہ لانے پر اس کا مذاق اڑاتی تھیں۔ منگل کے روز بھی ان کے درمیان لڑائی ہوئی جس کے بعد عارف اسے والدین کے گھر کے باہر چھوڑ گیا۔
خودکشی کرنے والی لڑکی کی شادی محض دو ماہ قبل ہوئی تھی۔ پولیس نے اس کے سسرالیوں کے خلاف مقدمہ درج کرکے قانونی کارروائی کا آغاز کردیا ہے۔