ایک نمائش کے دوران اس روبوٹ نے اچانک روسی صدر پیوٹن کا راستہ روک کر کیا بات کہہ دی؟ سن کر صدر پیوٹن کا بھی منہ کھلا کا کھلا رہ گیا، اب وہ وقت آگیا کہ روبوٹ بھی۔۔۔

ڈیلی بائیٹس


ماسکو(مانیٹرنگ ڈیسک) روبوٹ ٹیکنالوجی اس قدر ترقی کر رہی ہے کہ کئی ماہرین اس کی مخالفت کرنے لگے ہیں، جن کا کہنا ہے کہ اگر یہ ترقی یونہی جاری رہی تو ایک روز انسان روبوٹس کے ماتحت آ جائیں گے۔ اب روس میں اس کی ایک ایسی مثال سامنے آ گئی ہے کہ آپ کو روبوٹس کے ماتحت ہونے کا خطرہ آنکھوں کے سامنے نظر آنے لگے گا۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق گزشتہ دنوں روسی صدر ولادی میر پیوٹن ایک ٹیکنالوجی کمپنی کا دورہ کر رہے تھے، جو روبوٹس بناتی ہے۔ وہ کمپنی میں گھوم رہے تھے اور روبوٹس دیکھ رہے تھے کہ اس دوران یہ چشم کشا واقعہ پیش آ گیا۔


وہاں مصنوعی ذہانت کا حامل ایک روبوٹ تھا، جس کا خالق پیوٹن کو اس کی صلاحیتوں کے متعلق بتارہا تھا،کہ اچانک روبوٹ خود بول پڑا۔ اس نے صدر پیوٹن کو پہچان لیا تھا۔ اس نے ان کا پورانام لے کر ہیلو کہا، ان سے مصافحہ کیا اور اپنے بارے میں انہیں خود بتانا شروع کر دیا۔ اس نے پیوٹن کو بتایا کہ ’’میرا نام پروموبوٹ ہے۔ میں کاروبار کے لیے خودمختار خدمات فراہم کرنے والا روبوٹ ہوں۔ مجھے آپ سے مل کر بہت خوشی ہوئی۔‘‘رپورٹ کے مطابق یہ واقعہ دیکھ کر صدر پیوٹن بھی دنگ رہ گئے۔ اس روبوٹ کے خالق کا کہنا ہے کہ ’’یہ روبوٹ نہ صرف لوگوں کے چہروں کو پہچان سکتا ہے بلکہ مختلف تحریری دستاویزات میں بھی فرق کر سکتا ہے۔یہ مختلف اداروں میں آزادانہ معاونت کے لیے بنایا گیا ہے جہاں اس سے کئی طرح کے کام لیے جا سکتے ہیں۔‘‘