’اگر ازدواجی فرائض کی ادائیگی کے دوران یہ کام ہوجائے تو موت کا خطرہ بہت زیادہ ہوتا ہے‘ جدید تحقیق میں سائنسدانوں نے وارننگ جاری کردی

ڈیلی بائیٹس

نیویارک(نیوز ڈیسک)دل کا دورہ یوں تو کسی بھی حالت میں خطرناک ثابت ہو سکتا ہے لیکن ایک نئی تحقیق کے مطابق اگر ازدواجی فرائض کی ادائیگی کے دوران یہ کام ہو جائے تو انسان کے بچنے کا امکان بہت ہی کم ہوتا ہے۔
ڈیلی سٹار کے مطابق امریکن کالج آف کارڈیالوجی کے سائنسی جریدے میں شائع ہونے والی تحقیق کے مطابق جنسی عمل کے دوران دل کے دورے کا شکار ہونے والوں میں سے 94 فیصد تعداد مردوں کی ہے۔ اس مخصوص حالت میں دل کے دورے کا شکار ہونے والے مردوں کو دھڑکن کی بحالی کے لئے سی پی آر اور دیگر طبی امداد ملنے کا امکان بہت کم ہوتا ہے اور یہی وجہ ہے موت کا امکان بے حد بڑھ جاتا ہے۔

خوش رہنے کیلئے ہفتے میں کتنی مرتبہ ازدواجی فرائض کی ادائیگی ضروری ہے؟ جدید تحقیق میں سائنسدانوں نے انتہائی حیران کن انکشاف کردیا، مَردوں کے سب اندازے غلط ثابت کردئیے
دوسری جانب سیڈارس سینائی میڈیکل سنٹر ہارٹ انسٹی ٹیوٹ کیلیفورنیا کی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ ازدواجی فرائض کی ادائیگی کے دوران دل کا دورہ پڑنے کے واقعات بہت کم پیش آتے ہیں، لیکن جب بھی ایسا ہوتا ہے تو متاثرہ مردہ کے بچنے کا امکان بہت کم ہوتا ہے۔