’ میں اُس شخص کو مبارکباد دوں گا جو مس یونیورس کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالے اور۔۔۔‘ فلپائن کے صدر نے بھری محفل میں ایسا لطیفہ سنا دیا کہ دنیا بھر کی خواتین غصے سے لال پیلی ہو گئیں

ڈیلی بائیٹس

منیلا(مانیٹرنگ ڈیسک) فلپائن کے صدر روڈ ریگو ڈوٹیرٹے جب سے اقتدار میں آئے ہیں، عالمی رہنماﺅں کو گالیاں دینے اور خواتین سے جنسی زیادتی کے متعلق عجیب و غریب بیانات داغنے کی وجہ سے عالمی میڈیا کی زینت بنتے آرہے ہیں۔اب انہوں نے عالمی ملکہ حسن سے جنسی زیادتی کے متعلق بھی ایک چٹکلہ چھوڑ دیا ہے۔ الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق اپنے سفارت کاروں سے خطاب کرتے ہوئے ڈوٹیرٹے کا کہنا تھا کہ ”میں صرف بچوں سے جنسی زیادتی کو ناپسند کرتا ہوں۔ تم خواتین سے زیادتی کر سکتے ہیں، شاید ’مس یونیورس‘ کے ساتھ بھی، اور اگر کوئی شخص یہ جانتے ہوئے بھی ’مس یونیورس‘ سے جنسی زیادتی کرتا ہے کہ اسے بعد میں موت کے گھاٹ اتار دیا جائے گا، تو میں ایسے شخص کی ہمت کی تعریف کروں گااور اسے مبارک باد دوں گا۔“
رپورٹ کے مطابق ڈوٹیرٹے کے اس بیان سے اشارہ ملتا ہے کہ وہ خواتین سے جنسی زیادتی کے مجرموں کو بھی سزائے موت دینے کے حق میں ہیں۔ جیسا کہ اقتدار میں آتے ہی انہوں نے منشیات فروشوں اور استعمال کرنے والوں کو دیکھتے ہی گولی ماردینے کا حکم جاری کر دیا تھا۔ تب سے فلپائن میں ہزاروں منشیات فروشوں اور نشیﺅں کو قتل کیا جا چکا ہے۔1989ءمیں جب ڈوٹیرٹے فلپائن کے شہر ڈیواﺅ کے میئر تھے، وہاں ایک آسٹریلوی خاتون کو جنسی زیادتی کے بعد قتل کر دیا گیا تھا۔ اپنے صدارتی انتخاب کی مہم کے دوران انہوں نے اس پر بھی ایسا ہی متنازعہ بیان دیا تھا۔ انہوں نے کہا تھا کہ ”اس وقت مجھے غصہ تھا کہ اس لڑکی سے جنسی زیادتی کیوں کی گئی۔ لیکن وہ تھی ہی بہت خوبصورت،اس پر سب سے پہلے میئر کا حق بنتا تھا۔“کچھ عرصہ قبل انہوں نے اپنے فوجیوں کو ایک شورش زدہ علاقے میں بھیجتے ہوئے انہیں بھی ایسی ہی تلقین کی تھی۔ ڈوٹیرٹے نے انہیں کہا تھا کہ تم وہاں کچھ بھی کرنے میں آزاد ہو، تم وہاں کی خواتین کو جنسی زیادتی کا نشانہ بھی بناﺅ گے تو اس کے لیے میں جواب دہ ہوں گا۔