”دنیا بھر کے مردوں کو یہ ایک چیز سکھا سکھا کر میں نے چند ماہ میں ہی کروڑوں روپے کما لیے“ نوجوان نے اپنی دولت کا ایسا راز بتا دیا کہ جان کر ہر پاکستانی مرد ابھی اس سے بات کرنے کی کوشش کرے گا

ڈیلی بائیٹس

کنبرا(مانیٹرنگ ڈیسک) پک اپ کمیونٹی، مردوں کا ایک ایسا گروپ ہے جس کا کام خواتین کو ورغلانا اور جنسی تعلق قائم کرنا ہوتا ہے، گویا ان کی زندگی کا واحد مقصد ہی یہی ہو۔ اس گروپ کے رکن مرد ’پک اپ آرٹسٹ‘ کہلاتے ہیں۔ یہ پک اپ آرٹسٹ دیگر مردوں کو خواتین کو لبھانے اور اپنے عشق کے جال میں پھنسانے کے طریقے بھی سکھاتے ہیں۔ایسے ہی آسٹریلیا کے ایک پک اپ آرٹسٹ نے مردوں کو یہ گُر سکھا سکھا کر اتنی رقم کمائی ہے کہ گزشتہ 4سالوں میں اس نے سڈنی اور برسبن میں 3کروڑ ڈالر(تقریباً3ارب روپے) مالیت کے 6گھر خرید لیے ہیں اور اب وہ پراپرٹی کی دنیا کا بڑا نام بن چکا ہے۔اس 33سالہ پک اپ آرٹسٹ کا نام ڈینزیل جونز ہے۔


ڈینزیل نے ”سکول آف اٹریکشن“ کے نام سے ایک کمپنی بنا رکھی ہے جہاں وہ تنہاءمردوں کو خواتین کو پھانسنے کے طریقے سکھاتا ہے۔ وہ اس ”سکول“ میں آنے والے اپنے ”طلبائ“ 3مہینے کا ایک کورس کرواتا ہے جس کے عوض ان سے4ہزار ڈالر(تقریباً4لاکھ روپے) فیس وصول کرتا ہے۔ اس کا دعویٰ ہے کہ جو مرد اس کا یہ تین ماہ کا کورس کرلے وہ خواتین کو پٹانے کے فن میں تاک ہو جاتا ہے۔ ڈینزیل کا کہنا ہے کہ ”میں خواتین کو لبھانے کے لیے جو طریقے استعمال کرتا ہوں، میں نے پراپرٹی خریدنے میں بھی وہی طریقے استعمال کیے۔میں مضافاتی علاقوں میں سستے گھر خریدتا ہوں جہاں گھروں کا کرایہ قدرے زیادہ ہوتا ہے اور کچھ ہی عرصے میں گھر کی قیمت دوگنی ہو جاتی ہے۔“