’خواتین کو مَردوں میں بس ایک چیز کی تلاش ہوتی ہے اور وہ یہ کہ۔۔۔‘ جدید تحقیق میں سائنسدانوں نے ایسی انوکھی ترین بات کہہ دی کہ جان کر ہر مَرد کا منہ کھلا کا کھلا رہ جائے گا

ڈیلی بائیٹس

نیویارک (نیوز ڈیسک)دلکش شکل و صورت، اچھی حس مزاح، شفیق رویہ یا بہترین آمدنی، آخر مردوں کی وہ کونسی ایک خوبی ہے جس کی خواتین کو سب سے زیادہ تلاش ہوتی ہے۔ اس سوال کا جواب تلاش کرنے والی ایک تحقیقاتی ٹیم کو متعدد سوشل میڈیا ویب سائٹوں اور ایپس کو کنگھالنے کے بعد ایک ایسا جواب ملا ہے کہ ہر کوئی حیران رہ گیا ہے۔
میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق تحقیق سے معلوم ہوا کہ خواتین اس مرد میں سب سے زیادہ کشش محسوس کرتی ہیں جو شکل و شباہت میں ان کے بھائی جیسا نظر آتا ہے۔ سائنسدانوں نے اس تحقیق میں شامل خواتین سے ان کے بھائیوں اور خاوندوں کی تصاویر حاصل کی تھیں۔ ان تصاویر کے تجزیے سے معلوم ہوا کہ خاوندوں اور بھائیوں کی شکلوں میں قریبی مماثلت تھی۔ یہ تمام تصاویر ان خواتین سے لی گئی تھیں جنہوں نے اپنی پسند کا مرد ڈھونڈ کر اس سے شادی کی تھی۔

اگر مردوں کے جسم پر یہ ایک چیز ہوتوخواتین ان کی طرف اس طرح بھاگی آتی ہیں جیسے شہد کی مکھی پھولوں کی طرف، سائنسدانوں نے ایساانکشاف کردیا کہ ہرمرد یہ کام ضرور کرے گا
تحقیق کی رہنمائی کرنے والے سائنسدان تھامسن سیکسٹن کا کہنا تھا کہ ”مانوسیت ہماری پسند و ناپسند کے فیصلے میں اہم کردار ادا کرتی ہے۔ جن چہروں سے ہم مانوس ہوتے ہیں ان سے ملتے جلتے چہرے ہمیں تحفظ کا احساس دلاتے ہیں اور ہم ان کی جانب زیادہ دلکشی محسوس کرتے ہیں ۔ چونکہ خواتین کیلئے بھائی عموماً محبت اور تحفظ کی علامت ہوتے ہیں لہٰذا ان سے ملتی جلتی شکل والے مردوں میں بھی انہیں محبت اور تحفظ کی جھلک نظر آتی ہے۔“ یہ تحقیق سائنسی جریدے ’ایولوشن اینڈ ہیومن بہیویئر‘ میں شائع کی گئی ہے۔