اس امریکی لڑکی نے انٹرنیٹ پر ایک ویڈیو جاری کردی کہ سعودی عرب میں دھوم مچادی، ہر سعودی کے دل پر راج کرنے لگی، ویڈیو میں ایسا کیا کررہی ہے؟ دیکھ کر آپ بھی دیکھتے ہی رہ جائیں گے

ڈیلی بائیٹس

دبئی سٹی (مانیٹرنگ ڈیسک) آپ نے اکثر لوگوں کو کہتے سنا ہوگا کہ عربی زبان سیکھنا بہت مشکل کام ہے۔ دراصل سعودی عرب، امارات، بحرین یا شام میں بولی جانے والی عربی کا لہجہ مختلف ہونے کی وجہ سے ایک جگہ کی عربی سیکھ بھی لی جائے تو دیگر لہجوں کی مشکل باقی رہتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ کسی غیر عرب کی عربی زبان میں مہارت ایک انوکھی مثال سمجھی جاتی ہے، لیکن امریکی لڑکی شینن منیان نے تو کمال ہی کر دیا ہے۔ وہ ہر لہجے میں عربی ایسی مہارت سے بولتی ہیں کہ سننے والے عرب بھی حیرت سے دیکھتے رہ جاتے ہیں۔ یہی وجہ ے کہ شینن عرب سوشل میڈیا کی سپر سٹار بن گئی ہیں۔ ویب سائٹ یوٹیوب پر بھی ان کے چینل کو بے پناہ مقبولیت حاصل ہو چکی ہے کیونکہ عرب لوگ ایک امریکی گوری کے خالص حجازی لہجے کو سنتے ہی ان کے دیوانے ہو جاتے ہیں۔ ویب سائٹ indy100 کے مطابق شینن عرب شہریوں کو انگریزی بھی سکھاتی ہیں۔ ان کے یوٹیوب چینل کا بنیادی مقصد یہی ہے کہ عربوں کو عام انگریزی بول چال سے متعارف کروایا جائے۔

’میں ایک بیوٹی سیلون پر کام کرتی تھی کہ ایک دن۔۔۔‘ فحش فلموں میں کام کرنے والی پہلی پاکستانی اداکارہ نے ایسا انکشاف کردیا کہ جان کر پورا ملک حیران پریشان رہ جائے
شینن امریکی ریاست ورجینیا میں پیدا ہوئیں اور انہوں نے یونیورسٹی آف پنسلوانیا کے وارٹن سکول سے اکنامکس کے مضمون میں ڈگری حاصل کی۔ وہ 2010ءسے دبئی میں مقیم ہیں اور سعودی میڈیا کمپنی MBCکے لئے کام کرتی ہیں۔ وہ مشرق وسطیٰ منتقل ہوئیں تو عربی زبان سیکھنا ان کی ضرورت تھی۔ انہیں ایک کامیڈی شو میں کام کرنا تھا اور ڈائریکٹرنے انہیں بتایا کہ ان کیلئے خلیجی یا حجازی لہجے میں عربی بولنا ضروری ہو گا۔ شینن نے عربی زبان سیکھنا شروع کی اور جلد ہی حجازی عربی کی اصطلاحات پر بڑی حد تک عبور حاصل کرلیا۔ وہ کہتی ہیں کہ انہوں نے سوشل میڈیا پر اپنے عرب دوستوں کے ساتھ عربی زبان میں گفتگو کرتے ہوئے اپنی مشق جاری رکھی۔ اب وہ اتنی اچھی عربی بولتی ہیں کہ ان کے عرب دوست بھی حیران رہ جاتے ہیں۔ وہ اپنے یوٹیوب چینل پر امریکی عام بول چال سکھاتی ہیں اور اس موضوع پر ایک کتاب ’العامیہ الامریکیہ‘ بھی لکھ چکی ہیں۔ عرب نوجوان تو ان کے دیوانے ہو چکے ہیں۔ شینن بتاتی ہیں کہ انہیں نوجوانوں کے بے شمار پیغامات موصول ہوتے ہیں، جن میں سے اکثر ان سے اظہار محبت کے لئے ہوتے ہیں۔ عرب نوجوانوں کی بڑی تعداد ان سے شادی کی خواہاں ہے اور اکثر نوجوان تو ان کا ہاتھ مانگنے کے لئے ان کے والد سے رابطے کے متمنی بھی ہیں۔


anisaamrekeeya by dailypakistan