یہ کسان اپنی گائے کی دم پر اس طرح دانتوں سے کیوں کاٹ رہا ہے؟ حقیقت جان کر آپ بھی حیران پریشان رہ جائیں گے

ڈیلی بائیٹس

جکارتہ(مانیٹرنگ ڈیسک) ہمارے ہاں بھی دیہی علاقوں میں بیلوں کی دوڑ کے مقابلے ہوتے ہیں جن میں بیلوں کو زیادہ تیز بھاگنے پر مجبور کرنے کے لیے کچھ بہیمانہ طریقے بھی استعمال کیے جاتے ہیں، جن میں بیلوں کی آنکھوں میں مرچیں ڈال دینا اور انہیں چھڑی کے سامنے لگی کیل سے زخمی کرنا وغیرہ شامل ہیں۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ایسے ہی مقابلے انڈونیشیاءمیں بھی ہر سال منعقد ہوتے ہیں جن میں کسان حیران کن طور پر اپنے دانتوں سے بیلوں کی دم پر کاٹتے ہیں تاکہ وہ تیز بھاگیں۔
انڈونیشیاءمیں بیلوں کی ریس کے یہ مقابلے چاول کی فصل کی کاشت کے آغاز پر منعقد ہوتے ہیں، جن میں بیلوں کو چاول کی فصل کے لیے تیار، کیچڑ اور پانی سے بھرے کھیت میں دوڑایا جاتا ہے۔ بیلوں کا مالک ان کے پیچھے سہاگے پر کھڑا ہوتا ہے اور انہیں تیز کرنے کے لیے گاہے ان کی دم پر کاٹتا رہتا ہے۔ ان مقابلوں میں بیلوں کی جو جوڑیاں فتح یاب ہوتی ہیں انہیں انعام دیا جاتا ہے اور اس جوڑی کی قیمت بھی دوگنا تک بڑھ جاتی ہے اور کسان انہیں بیوپاریوں کے ہاتھ فروخت کرکے نفع کماتے ہیں۔

ایسا شرمناک میلہ جس میں کسی مرد و عورت کو کپڑے پہن کر آنے کی اجازت نہیں ,شروع ہونے کا اعلان کردیا گیا
رپورٹ کے مطابق یہ ریس بہت خطرناک بھی ہوتی ہے۔ سہاگے پر موجود افراد بھی بسااوقات حادثات کا شکار ہو جاتے ہیں اور ریس دیکھنے کے لیے آنے والے بھی اس وقت خطرے سے دوچار ہو جاتے ہیں جب کوئی جوڑی بھاگتی ہوئی کھیت سے باہر تماشائیوں میں گھس جاتی ہے۔ ایسے واقعات میں درجنوں افراد کے زخمی ہونے کا اندیشہ ہوتا ہے اور بعض اوقات ہلاکت بھی ہو سکتی ہے۔