دنیا کے معروف ترین جنگل میں مقیم قبیلے پر تحقیق، ڈاکٹروں نے ان کے دلوں کا معائنہ کیا تو ایسی چیز مل گئی کہ ہر کوئی دنگ رہ گیا، وہ چیز جو دنیا میں مقیم اور کسی کے دل میں نہیں

ڈیلی بائیٹس

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی ڈاکٹروں نے شمالی امریکہ کے جنگل ایمازون میں رہنے والے ایک قبیلے کے افراد پر تحقیق کی جس میں ان کے دل کے متعلق ایسا انکشاف ہوا ہے کہ تحقیق کار بھی دنگ رہ گئے۔ ٹیلیگراف کی رپورٹ کے مطابق ڈاکٹروں نے اس قبیلے کے افراد کی صحت کا معائنہ کیا ہے جس میں معلوم ہوا ہے کہ ان کے دل دنیا بھر میں سب سے زیادہ صحت مند ہیں۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ انہوں نے آج تک دنیا بھر میں جتنے بھی لوگوں کے دلوں اور نظام دوران خون کا معائنہ کیا ہے ان میں اس قبیلے کے افراد کے دل مضبوط اور صحت مند تھے۔ ان کی خون کی وریدیں عمر رسیدگی میں بھی انتہائی نرم اور کھلی تھیں، جس کے باعث ان میں سے زیادہ تر ہارٹ اٹیک ہونے کے امکانات صفرتھے۔

دنیا کا وہ چڑیا گھر جہاں انسانوں کو پنجرے میں بند کردیا گیا
یونیورسٹی آف نیو میکسیکو کے ڈاکٹروں نے Tsimaneنامی اس قبیلے کے سینکڑوں مردوخواتین کے دلوں کا معائنہ کیا جس میں معلوم ہوا کہ ہر 10میں سے 9افراد کی وریدیں اس قدر صاف تھیں کہ ان میں دل کی بیماریوں میں مبتلا ہونے کے امکانات صفر تھے۔ 75برس سے زائد عمر کے 2تہائی افراد میں بھی دل کی بیماریوں کا امکان صفر جبکہ باقی میں انتہائی معدوم تھا۔ قبیلے کے ایک 80سالہ بزرگ کے دل اور وریدوں کی حالت باقی دنیا کے 50سالہ افراد سے کہیں بہتر تھی۔


تحقیق کار پروفیسر ہیلرڈ کیپلن کا کہنا تھا کہ ”یہ لوگ انتہائی متحرک زندگی گزارتے ہیں۔ دن بھر یہ کھیتی باڑی کرتے ہیں، جانوروں کا شکار کرتے اور مچھلیاں پکڑتے ہیں اور جنگلی پھل و دیگر اشیاءاکٹھی کرنے میں مصروف رہتے ہیں۔ اس کے علاوہ ان کی خوراک کاربوہائیڈریٹس پر مشتمل ہوتی ہے اور اس میں پروٹین اور چکنائی کا انتہائی کم حصہ ہوتا ہے۔ ان کی خون کی وریدوں کے نرم اور صاف ہونے اور دل کے صحت مند ہونے میں ان باتوں کا بہت بڑا ہاتھ ہے۔“