اگر جہاز کے ٹیک آف کے وقت آپ کا موبائل فون آن رہ جائے تو کیا ہوتا ہے؟ پائلٹ نے بالآخر معمہ حل کردیا، ایسا جواب دے دیا جس کی کسی کو بھی توقع نہ تھی

ڈیلی بائیٹس

لندن (نیوز ڈیسک)ہوائی سفر کے آغاز میں مسافروں کو خصوصی ہدایت کی جاتی ہے کہ وہ تمام الیکٹرانک ڈیوائس آف کردیں، جن میں موبائل فون بھی شامل ہے۔ کچھ مسافر ایسے بھی ہوتے ہیں جن کاموبائل فون بے دھیانی میں آن رہ جاتا ہے، تو کچھ اس ہدایت کو نظر انداز کرکے چوری چوری ٹیک آف کے مناظر سوشل میڈیا پر پوسٹ کرتے رہتے ہیں۔ ایسے مسافروں کے دل میں یہ سوال ضرور ہوتا ہے کہ ٹیک آف کے دوران موبائل فون آن ہونے کا کیا نتیجہ نکل سکتا ہے؟
ایزی جیٹ ایئرلائن کے تجربہ کار پائلٹ کرس فوسٹر ان لوگوں کو اطمینان دلاتے ہوئے کہتے ہیں کہ اگر آپ کا موبائل فون ٹیک آف کے دوران آن رہ جائے تو غالباً اس کی وجہ سے کوئی بڑی پریشانی پیدا نہیں ہوگی۔ ویب سائٹ Indy100 کی رپورٹ کے مطابق کرس فوسٹر نے بتایا کہ آج کل کے طیاروں میں انتہائی جدید کنٹرول سسٹم ہوتے ہیں جو موبائل فون کے سگنل کی ہوائی جہاز کے کمیونیکیشن سسٹم میں مداخلت کو روک سکتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ الیکٹرانک ڈیوائس کو آف کردینے کے قوانین کئی سال پہلے متعارف کروائے گئے تھے لیکن اب ان قوانین میں نرمی کی جارہی ہے، مثلاً اب آپ اپنے ڈیوائس کو فلائٹ سیفٹی موڈ میں استعمال کرسکتے ہیں۔

معروف کھلاڑی کو جہاز سے ایسی بات پر آف لوڈ کردیا گیا کہ وجہ جان کر آپ بھی ہنس ہنس کر لوٹ پوٹ ہوجائیں گے
کرس فوسٹر نے کچھ دیگر سوالات کے بھی جواب دئیے۔ اکثر لوگوں کے ذہن میں یہ سوال ہوتا ہے کہ دوران پرواز طیارے کا دروازہ کھل جائے تو کیا ہوگا، جس کے جواب میں انہوں نے بتایا کہ طیارے کے اندر بہت زیادہ پریشر کی وجہ سے یہ ممکن نہیں ہوتا کہ کوئی دروازے کو کھول سکے۔ آسمانی بجلی کے خطرے کے متعلق ان کا کہنا تھا ”ہوائی جہازوں کو اتنا مضبوط بنایا جاتا ہے کہ عموماً آسمانی بجلی سے انہیں کوئی خطرہ نہیں ہوتا۔ مزید یہ کہ موسمیاتی مشاہدے کے جدید ترین آلات کو استعمال کرتے ہوئے شدید بادوباراں والے فضائی روٹ سے گریز کیا جاتا ہے۔“