ویزا لینے کیلئے میاں بیوی کی امریکی سفارتخانے آمد، امیگریشن افسر نے ایک سوال ایسا پوچھ لیا کہ جواب نہ بن پایا تو فوری پولیس بلالی گئی، امریکہ کی بجائے جیل جانا پڑگیا کیونکہ۔۔۔

ڈیلی بائیٹس

ممبئی (نیوز ڈیسک) غریب ممالک کے عوام امریکہ جانے کیلئے بہت بے تاب ہوتے ہیں اور بعض اوقات اس بے تابی میں عجیب و غریب حماقتیں بھی کر بیٹھتے ہیں، جن کے طفیل امریکا کی بجائے جیل چلے جاتے ہیں۔ ایک ایسا ہی نرالا کام ایک بھارتی دوشیزہ اور اس کے ساتھی مرد نے کیا جس کے نتیجے میں اب دونوں جیل میں ہیں۔
ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق خاتون نے خود کو مرچنٹ نیوی کے ایک افسر کی اہلیہ بتایا، جو ویزہ انٹرویو کے لئے خود بھی خاتون کے ساتھ تشریف لائے تھے۔ امریکی قونصلیٹ کے اہلکار یہ دیکھ کر کچھ حیران ہوئے کہ مبینہ خاوند کے پاسپورٹ پر تو امریکی ویزے کی کئی مہریں لگی ہوئی تھیں لیکن خاتون کے اپنے پاسپورٹ پر ایسی ایک بھی مہر نہ تھی۔ جب خاتون سے پوچھا گیا کہ ان کے خاوند کبھی بھی انہیں ساتھ امریکا نہیں لے کر گئے، تو وہ کوئی جواب نہ دے پائی۔ اہلکاروں نے شکوک گہرے ہونے پر کچھ مزید سوالات کئے تو ساری کہانی کھل گئی۔

وہ انتہائی ترقی یافتہ ملک جس کی ترقی نے اس کے شہریوں کو بانجھ بنادیا، بچے پیدا کرنے کے قابل نہ رہے کیونکہ۔۔۔
رپورٹ کے مطابق بھارتی ریاست گجرات سے تعلق رکھنے والی خاتون کا نام کرن پارمر ہے اور اس کا منگیتر امریکہ میں مقیم ہے۔ وہ اس سے ملنے کیلئے امریکا جانا چاہتی تھی۔ خاتون نے ایک ایجنٹ کی مدد سے مرچنٹ نیوی کے بیروزگار اہلکار نکولس جوڈ کی خدمات حاصل کیں تاکہ وہ اسے اپنا خاوند ظاہر کرکے امریکہ جانے کی کوشش میں کامیاب ہوسکے۔ نکولس کو اس خدمت کے عوض ڈیڑھ لاکھ روپیہ دینے کا وعدہ کیا گیا تھا۔ کرن کا خیال تھا کہ اگر وہ یہ ثابت کرسکے کہ اس کا خاوند متعدد بار امریکہ کا سفرکرچکا ہے تو قونصلیٹ اسے ’ان ڈائریکٹ ایکسیس ٹو دی یو ایس‘ قرار دیتے ہوئے اسے ویزہ جاری کردے گا۔ چونکہ اس کا منگیتر غیر قانونی طریقے سے امریکہ گیا ہوا تھا لہٰذا وہ اسے اپنی طرف سے امریکہ آنے کا دعوت نامہ نہیں بھجواسکتا تھا، اور نہ ہی وہ اس کی امریکا میں موجودگی کا ذکر کرنا چاہتی تھی۔
قونصلیٹ کے اہلکاروں کو اس بات سے بھی شبہ ہوا کہ خاتون اور اس کے مبینہ خاوند نکولس، جو کہ ایک بھارتی شہری ہے اور ممبئی کے علاقے باندرہ کا رہائشی ہے، کے درمیان کسی طرح کی بھی مطابقت نظر نہیں آ رہی تھی۔ ایک اہلکار نے بتایا کہ وہ دونوں کہیں سے بھی میاں بیوی نہیں لگ رہے تھے۔ انہیں یہ بات بھی سمجھ نہیں آ رہی تھی کہ اگر کرن نکولس کی بیوی تھی تو یہ کیسے ممکن تھا کہ اس کے امریکہ کے متعدد دوروں کے دوران وہ ایک بار بھی اسے ساتھ نہیں لے کر گیا تھا۔ جب یہ جوڑا کسی بھی سوال کا تسلی بخش جواب نہ دے سکا تو پولیس کو بلوا لیا گیا۔ دونوں اب پولیس کی حراست میں ہیں اور اس ایجنٹ کی بھی تلاش کی جا رہی ہے جس نے کرن اور نکولس کے درمیان معاملات طے کروائے تھے۔