سائنسدانوں نے سیاسی خیالات اور جنسی عادات کے درمیان گہرا تعلق بے نقاب کردیا، کس جماعت کے سپورٹروں کو کونسے شرمناک کاموں کا شوق ہوتا ہے؟ سب کچھ بے نقاب کردیا

ڈیلی بائیٹس

پیرس(مانیٹرنگ ڈیسک)اب تک تو ووٹ کاصرف ایک ہی بظاہرمصرف تھا کہ اس کے ذریعے حکومتیں منتخب کی جاتی تھیں لیکن اب سائنسدانوں نے ووٹ اور انسانی نفسیات کے مابین ایک ایسے تعلق کا انکشاف کر دیا ہے کہ آج تک کسی کے وہم و گمان میں بھی نہ تھا۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق فرانس کے سائنسدانوں نے اس تحقیق میں بتایا ہے کہ ”ووٹ کا استعمال انسان کے سیاسی خیالات کا غماز ہوتا ہے اور سیاسی خیالات اس کی جنسی عادات کا پتا دیتے ہیں۔ جو لوگ دائیں بازو کی جماعتوں کی حمایت کرتے ہیں وہ جنسی عمل کارسمی یا روایتی لیکن متشدد طریقہ اختیار کرتے ہیں لیکن جو لوگ بائیں بازو کی جماعتوں کو ووٹ دیتے ہیں وہ زیادہ تر غیرروایتی طریقوں کے قائل ہوتے ہیں۔ یہ لوگ شادی کی بجائے وقت گزاری کرتے ہیں اور گروپ کی شکل میں جنسی عمل پسند کرتے ہیں۔“

زبردستی شادی سے بچنے کیلئے نوجوان سعودی لڑکی گھر سے بھاگ نکلی لیکن جیسے ہی جاکر جہاز میں سوار ہوئی تو ایسا منظر کہ زندگی کا سب سے بڑا جھٹکا لگ گیا، وہ کام ہوگیا جس کا کبھی خوابوں میں بھی تصور نہ کیا تھا
رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں نے گزشتہ فرانسیسی صدارتی انتخابات میں ووٹ کا حق استعمال کرنے والے 4ہزار لوگوں کی سیاسی وابستگی اور ان کی جنسی عادات کا تجزیہ کیا۔ ان میں سے جن ووٹرز نے دائیں بازو کی امیدوار کو ووٹ دیئے تھے ان کی اکثریت متشدد جنسی عمل پسند کرتے تھے۔ اس کے برعکس جن ووٹر نے بائیں بازو کے امیدوار کو ووٹ دیئے ان میں سے 37فیصد نے اعتراف کیا کہ وہ گروپ کی شکل میں جنسی عمل کر چکے ہیں۔ اس گروپ کے 23فیصد لوگوں نے یہ بھی اعتراف کیا کہ وہ جنسی عمل کے لیے اپنے شریک حیات کا دوسروں کے شریک حیات کے ساتھ تبادلہ بھی کر چکے ہیں۔“ واضح رہے کہ اس تحقیقاتی سروے کے نتائج سونگرز نیٹ ورکنگ گروپ Wyyldeنے شائع کیے ہیں۔