جہاز پر ملنے والا کھانا کیسے تیار کیا جاتا ہے؟ کتنی دیر پرانا ہوتا ہے اور جہاز پر کیسے پہنچایا جاتا ہے؟ ان سوالات کا جواب جان کر آپ بھی دوران پرواز ملنے والے کھانے کو ہاتھ بھی نہ لگائیں گے

ڈیلی بائیٹس

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) آپ نے فضائی سفر کر رکھا ہے تو یقینا ہوائی جہاز میں ملنے والا کھانا بھی کھایا ہو گا لیکن اب ایک عالمی شہرت یافتہ شیف نے جہاز میں ملنے والے اس کھانے کے متعلق ایسے انکشافات کر دیئے کہ آئندہ آپ کبھی اس کھانے کو ہاتھ بھی نہیں لگائیں گے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق برطانوی شیف گورڈن رمسے کا کہنا ہے کہ وہ کبھی بھی ہوائی سفرکے دوران ملنے والا کھانا نہیں کھاتے کیونکہ یہ کھانے کے قابل ہی نہیں ہوتا۔ یہ جن حالات سے گزر کر مسافروں تک پہنچتا ہے وہ جان کر ہی لوگوں کو قے آ جائے۔

چھٹیاں منانے کیلئے دنیا کی سب سے سستی جگہ کونسی ہے؟ جواب انتہائی حیران کن، وہ انتہائی خوبصورت جگہ جہاں آپ انتہائی سستے میں پرتعیش چھٹیاں گزار سکتے ہیں
گورڈن نے بتایا ہے کہ ”میں نے ایک ایئرلائنز کے ساتھ 10سال تک کام کیا ہے لہٰذا میں جانتا ہوں کہ یہ کھانا کہاں بنتا ہے، پھر کہاں جاتا ہے اور اسے جہاز میں مسافروں تک پہنچنے میں کتنے دن لگتے ہیں۔مسافروں کو ملنے والا کھانا ایئرپورٹ کے قریب واقع ایک انڈسٹریل کچن میں پارٹس میں تیار ہوتا ہے۔ اس کے بعد اسے ریفریجریٹر میں محفوظ کر دیا جاتا ہے۔ دنیا بھر میں ایک انڈسٹریل کچن میں روزانہ اوسطاً 25ہزار افراد کا کھانا تیار ہوتا ہے۔ کچن میں تیاری کے بعد پانچ روز تک یہ کھانا ریفریجریٹر میں پڑا رہتا ہے اور پھر اسے جہاز میں لیجا کر دوبارہ گرم کرکے مسافروں کو پیش کر دیا جاتا ہے۔ آپ جہاز کی جس کلاس میں بھی بیٹھے ہوں، سبھی کو یہی کھانا دیا جاتا ہے۔ان انڈسٹریل باورچی خانوں میں صفائی کی حالت بھی انتہائی ناگفتہ بہ ہوتی ہے۔“