’مجھے مردانگی سے محروم کر دو تاکہ میں یہ کام کر سکوں ‘ اپنے جسم پر لاکھوں روپے لگانے والے نوجوان نے ڈاکٹر کے پاس آکر ایسی بات کہہ دی کہ ڈاکٹر بھی ہکا بکا رہ گیا، اس فرمائش کی وجہ ایسی کہ کوئی مرد خوابوں میں بھی نہیں سوچ سکتا

ڈیلی بائیٹس

لاس اینجلس (نیوز ڈیسک)کسی مرد کیلئے اس سے بھیانک بات کیا ہو سکتی ہے کہ وہ مردانگی سے محروم ہو جائے لیکن امریکی نوجوان وینیو کی بدقسمتی کا اندازہ کیجئے کہ وہ خود ڈاکٹروں سے درخواست کرتا پھر رہا ہے کہ اس کے جسم کا مردانہ حصہ کاٹ دیا جائے ۔ 

دی مرر کی رپورٹ کے مطابق 23 سالہ وینیوکو خلائی مخلوق جیسا نظر آنے کا شوق ہے اور اس عجیب و غریب شوق کو پورا کرنے کیلئے وہ اپنے جسم کے مختلف حصوں کے اب تک 100 سے زائد چھوٹے بڑے آپریشن کروا چکا ہے ۔ اگرچہ وہ پہلے ہی بڑی حد تک خلائی مخلوق بن چکا ہے لیکن ابھی بھی اس کی تسلی نہیں ہوئی۔ اب وہ چاہتا ہے کہ مردانگی سے بھی محروم ہو کر ایک بے جنس خلائی مخلوق بن جائے۔


وینیو نے اب تک تین بڑے پلاسٹک سرجری کے آپریشن کروائے ہیں اور تقریباً ایک سو معمولی پروسیجر کروائے ہیں ، جن پر وہ 45 ہزار پاﺅنڈ (تقریباً 68 لاکھ پاکستانی روپے ) خرچ کر چکا ہے۔ اس کی نامعقول خواہش پوری کرنے پر اب تک کوئی پلاسٹک سرجن تیار نہیں ہوا ۔ اگر کوئی ڈاکٹر اسے مردانگی سے محروم کرنے پر تیار ہو گیا تو یہ اپنی نوعیت کا پہلا واقعہ ہو گا کہ کسی شخص نے خلائی مخلوق بننے کیلئے جسم کا اہم حصہ کٹوا ڈالا۔