طالبعلم اپنے کمرے میں داخل ہوا تو اپنی اُستانی کو دیکھ کر دنگ رہ گیا، ایسی شرمناک تصویر کھینچ کر انٹرنیٹ پر لگادی کہ چند ہی منٹوں میں پوری دنیا میں پھیل گئی

ڈیلی بائیٹس

ایڈنبرا (نیوز ڈیسک) سکاٹ لینڈ کے ایک مشہور سکول کی رقص پارٹی کے بعد ایک طالبعلم اپنے کمرے میں گیا تو اپنی ٹیچر اور ایک ساتھی طالب علم کو کمرے میں قابل اعتراض حالت میں دیکھ کر ہکا بکا رہ گیا ۔ اخبار دی میٹرو کی رپورٹ کے مطابق 17 سالہ طالبعلم کا کہنا تھا کہ وہ شرم کے مارے واپس چلا گیا لیکن کافی دیر بعد واپس آیا تو تب بھی ٹیچر کو سٹوڈنٹ کے ساتھ اسی حالت میں پایا۔ دونوں برہنہ اور شراب کے نشے میں دھت تھے اور بے حیائی سے باز نہیں آ رہے تھے، جس پر انہیں دیکھنے والے طالبعلم نے دونوں کی تصویر بنائی اور سوشل میڈیا پر پوسٹ کردی۔

برطانیہ کی اعلیٰ فوجی خاتون اہلکار نے ہزاروں فوجیوں کو اپنی برہنہ تصویر بھیج دی کیونکہ۔۔۔
یہ تصویر سامنے آتے ہی سکاٹ لینڈ میں ہنگامہ برپاہوگیا اورطالبعلم کے ساتھ شیطانی حرکات کرنے والی ٹیچر کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا جانے لگا۔ دوسری جانب ایزا بیل گراہم نامی ٹیچرنے الزامات کو ماننے سے صاف انکار کردیا، تاہم وہ اپنی نوکری سے استعفیٰ دے کر بیرون ملک چلی گئی۔ اب اس کے خلاف مقدمہ چلایا جارہا ہے اور بار بار اسے پیش ہونے کا حکم دیا جاتا ہے مگر وہ اپنی موج مستی میں مشغول ہے اور عدالت کو جواب دینے کی زحمت بھی گوارہ نہیں کررہی۔
واضح رہے کہ امریکی اور برطانوی سکولوںمیں سینئر طلبا وطالبات کے لئے منعقد کی جانے والی خصوصی سالانہ رقص پارٹی اب ایک روایت بن چکی ہے۔ رات بھر جاری رہنے والی اس پارٹی میں رقص و موسیقی، شراب نوشی اور ہر طرح کی بے حیائی کی جاتی ہے۔ عموماً یہ بے حیائی طلبا و طالبات تک محدود ہوتی ہے لیکن بعض اوقات کچھ بے شرم ٹیچر بھی اس کا حصہ بن جاتے ہیں۔
اس سے پہلے بھی کئی امریکی اور برطانوی سکولوں کی ان پارٹیوں کے دوران اساتذہ اور طلبا وطالبات کے درمیان بے حیائی کے تعلق کی خبریں سامنے آچکی ہیں۔اس شرمناک رجحان پر قابو پانے کی کوششیں کی جا رہی ہیں لیکن آئے روز کوئی نیا واقعہ سامنے آجاتا ہے۔