’حمل کے دوران زیادہ تر خواتین کے جسم کے اس حصے کا سائز ہمیشہ کیلئے بڑھ جاتاہے‘ سائنسدانوں نے انتہائی حیران کن انکشاف کردیا، بالآخر معمہ حل کردیا

تعلیم و صحت

سان فرانسسکو (نیوز ڈیسک) حمل کے دوران کے خواتین کے وزن اور حجم میں واضح اضافہ دیکھنے میں آتا ہے، جو زچگی کے بعد دوبارہ پہلے والی حالت میں لوٹ جاتا ہے، البتہ حیرت کی بات ہے کہ اس دوران پاﺅں کے سائز میں بھی اضافہ ہوتا ہے اور یہ اضافہ ہمیشہ کے لئے ہوتا ہے۔
ویب سائٹ میڈیکل نیوز ٹوڈے کی رپورٹ کے مطابق سائنسی جریدے ”امریکن جرنل آف فزیکل میڈیسن اینڈ ری ہبیلی ٹیشن“ میں شائع ہونے والی تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ حمل کے دوران اضافی بوجھ کی وجہ سے پاﺅں قدرے چپٹے ہوجاتے ہیں اور ان کے جوڑ بھی نرم پڑجاتے ہیں۔ا س تبدیلی کی بنیادی وجہ ہارمون ری لیکسن ہے جو تولیدی اعضاءکے ساتھ پاﺅں کے جوڑوں اور عضلات کو بھی نرم کرنے کا سبب بنتا ہے۔ تحقیق کار پروفیسر نیل سیگل کا کہنا تھا ”میں نے خواتین سے کئی بار سنا تھا کہ حمل کے دوران ان کے پاﺅں کا سائز بڑھ گیا لیکن مجھے میڈیکل کے جرائد اور کتب میں کبھی اس کے بارے میں کوئی بات نہ ملی تھی۔ اس معاملے کی تحقیق کرنے کے لئے ہم نے متعدد خواتین کے پاﺅں کی پیمائش حمل کے آغاز میں اور پھر بچے کی پیدائش کے 5ماہ بعد دوبارہ پیمائش کی۔ اس تحقیق سے ثابت ہوا کہ حمل کے دوران پاﺅں کا سائز بڑھ جاتا ہے اور یہ تبدیلی مستقل ہوتی ہے۔“

’’حمل کے دوران خواتین کسی بھی صورت اس چیز کے پاس بھی نہ جائیں ورنہ بڑا نقصان ہوجائے گا‘‘ سائنسدانوں نے سب سے بڑے خطرے سے آگاہ کردیا
تحقیق سے یہ واضح ہوگیا کہ حمل کے دوران 60 سے 70 فیصد خواتین کے پاﺅں کے سائز میں اضافہ ہوتا ہے۔ یہ اضافہ دو ملی میٹر سے 10ملی میٹر تک ہوسکتاہے۔ سائنسدانوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ حمل کی وجہ سے پیروں کے جوڑوں اور ساخت پر پڑنے والا دباﺅ خواتین میں جوڑوں کے درد، اور خصوصاً گھٹنوں، کولہوں اور ریڑھ کی ہڈی کے نسبتاً زیادہ مسائل کی وجہ بھی ہوسکتاہے۔