دبلی اور لچکیلی کمر کا خواب دیکھنے والی عورتوں کے لئے وہ چار غذائیں جو ان کی نسوانیت اور صحت کھونے نہیں دیتیں

تعلیم و صحت

لاہور (حکیم محمد عثمان )جن عورتوں کی کمر کمرہ بن جاتی ہے وہ اسکو دوبارہ سے دبلا اور لچکداربنانے کی حسرت میں بڑے جتن بھی کرتی ہیں لیکن ان کی کوئی تدبیراس وقت تک کارگر نہیں ہوتی۔جب تک وہ اپنا غذائی مزاج نہیں بدل دیتیں ۔ایسی خواتین چربی تحلیل کرنے والی یہ چار چیزیں کھاناشروع کردیں تو ان کی اضافی کیلوریز جلنا شروع ہوجائیں گی ،ان غذاؤں سے انکی کمر اور پیٹ کے گرد اضافی چربی اکٹھی نہیں ہوگی ۔چربی کوتحلیل کرنے والی غذاوں کی خوبی یہ ہوتی ہے کہ وہ فطری طور پر جزوبدن بنتی ہیں اور توانائی پیدا کرتی ہیں .
غذائی ماہرین کا کہنا ہے کہ بھوک کے بغیر الّم غلّم کھانے والوں کو جان لینا چاہئے کہ وہ اپنے معدہ میں ایسی غذائیں ٹھونس کر اسکو کام پر مجبور رکھتے ہیں کہ اس سے چربی بننے کا عمل جاری ہوجاتا ہے ،سارا دن کچھ نہ کچھ کھاتے رہنے والیوں کو سب سے زیادہ نقصان اسی وجہ سے ہوتا ہے۔ان کا بھوک کا دورانیہ اور نظام خراب ہوجاتا ہے جس سے چربی بننے کا عمل تیز اور جاری رہتا ہے۔لہذا سب سے پہلے خواتین کو کھانے پینے کے شوق پر قابو پانا ہوتا ہے۔ دبلی کمرکو برقرار رکھنے کے لئے خواتین کو خوراک کی مقدار اور متوازن غذا کا نظریہ اپنانا چاہئے ۔ ایسی خواتین کے لئے درج ذیل چار غذائیں جسم میں پیدا ہونے والی اضافی چربی کوچوکا لگا کر باہر پھینک دیتی ہیں ۔

آنکھوں کے گرد حلقے اور سوجن آپ کی صحت کے بارے میں کیا کہتے ہیں؟
مچھلی
خواتین کی غذا میں جب بھی اومیگا تھری کی کمی واقع ہوگی ،ان کے دماغ میں پینیل گلینڈز کی کارکردگی متاثر ہوگی۔ اومیگا تھری کی مقدار بدن میں پوری ہوتو اس سے نیند اور اعصاب کا نظام درست رہتا ہے۔ ایسی خواتین دیر گئے رات کو کھانے سے بھی اپنے ہاتھوں کو روک لیتی ہیں۔ مچھلی میں پروٹین موجود ہوتی ہے اور اس سے کیلوریز بھی جلتی رہتی ہیں۔
مغزیات
خواتین کا موڈدرست ہوتو وہ اچھے کام کرنے اور اپنی صحت پر توجہ دینے میں کامیاب رہتی ہیں۔مغزیات میں میگنیشئم کی مناسب اور عمدہ مقدار ہوتی ہے جو موڈ کو بہتر بنانے کے کام آتی ہے۔ وزن گھٹانے اور جسمانی ساخت کو برقرار رکھنے کے لئے میگنیشم کی سطح برقرار رہنی چاہئے ۔اس سے امیون سسٹم بحال اور قائم رہتا ہے۔
دودھ
دودھ عمدہ ترین غذا ہے۔خواتین عموماً دودھ پینے سے گریز کرتی ہیں۔یونیورسٹی آف الاباما نے برمنگھم میں ایک ریسرچ کے دوران انکشاف کیا تھا کہ دودھ پینے والی خواتین اضافی چربی سے محفوظ رہتی ہیں ۔دودھ میں کیلشئیم کی بھاری مقدار ہوتی ہے جو خواتین کے نسوانی اعضا کی کارکردگی کو برقرار رکھنے کے لئے انتہائی ضروری ہے۔دودھ پینے سے اعصاب پُرسکون رہتے ۔
چیریز
چیریز میں میلاٹونن کی کافی مقدار ہوتی ہے جو نیند لانے والے ہارمونز کی کارکردگی بحال رکھنے والا مادہ ہے۔یہ اینٹی آکسیڈنٹ عنصر کا حامل ایسا پھل ہے جس کے اجزا موٹاپے اور وزن بڑھانے والے مادوں کو روکتے ہیں۔