اگر آپ کے کانوں کی میل اس رنگ کی ہوجائے تو فوری ڈاکٹر کو فون کریں کیونکہ۔۔۔ ماہرین نے خبردار کردیا، آپ بھی ضرور جان لیجئے

تعلیم و صحت

برمنگھم(نیوز ڈیسک)کان کی میل سے اکثر لوگوں کو گِھن آتی ہے لیکن سچ تو یہ ہے کہ یہ بڑے کام کی چیز ہے۔ اگرچہ بظاہر یہ بات بے معنی محسوس ہوتی ہے لیکن ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ اگلی بار آپ اپنا کان صاف کریں تو یہ دیکھنے کی زحمت ضرور کریں کہ اس میں سے کیا نکلا ہے کیونکہ کان کے میل کی رنگت آپ کی صحت کے بارے میں بہت کچھ بتاسکتی ہے۔ 
ویب سائٹ ہیلتھ اویئرنیس فار آل کی ایک رپورٹ کے مطابق ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ کان کی میل دراصل ایک ایسا لیسدار مادہ ہوتا ہے جسے ہمارا جسم پیدا کرتا ہے تاکہ گرد وغبار اور جراثیم وغیرہ کان کے اندر داخل نہ ہوسکیں۔ یہ ایک خاص قسم کا مادہ ہوتا ہے جو فیٹی ایسڈ، سکوالین اور الکوحل وغیرہ جیسے مرکبات سے بنا ہوتا ہے۔

ا گر اس کی زنگت زردی مائل، نمدار ہے اور یہ چپکتی محسوس ہوتی ہے تو یہ سب سے عام پائی جانے والی اور نارمل نوعیت کی میل ہے۔ یہ کان کی اندرونی سطح کو خشک ہونے اور خارش وغیرہ سے محفوظ رکھتی ہے۔ 
اگر اس کی رنگت خاکستری ہے تواس میں بھی پریشانی کی کوئی بات نہیں لیکن اگر یہ خاکستری میل خشک ہے اور آپ کے کان میں کھجلی بھی محسوس ہوتی ہے تو یہ اس بات کی علامت ہوسکتی ہے کہ آپ کے کان میں جلدی بیماری ایگزما پیدا ہوچکی ہے۔ ایسی صورت میں ڈاکٹر سے مشورہ کرلینا مفید ہے۔
اگر کان کے میل کی رنگت گہری زد ہے تو یہ بھی نارمل ہوسکتی ہے۔ عام طور پر یہ رنگت بچوں کے کان کی میل میں پائی جاتی ہے۔ بچوں میں کان کی میل بڑوں کی نسبت زیادہ پیدا ہوتی ہے۔
اگر کان کے میل کی رنگت قدرے سیاہی ما ئل ہے اور یہ چپکتی محسوس ہوتی ہے تو یہ اس بات کی علامت ہے کہ آپ کا جسم معمول سے زیادہ پسینہ پیدا کرتا ہے تاہم اس میں تشویش کی کوئی بات نہیں۔
اگر یہ میل سیاہی مائل اور بہت گاڑھی محسوس ہوتو اس بات کی علامت ہے کہ آپ کو باقاعدگی سے کان صاف کرنے کی ضرورت ہے۔ اس کی ایک وجہ ذہنی دباﺅ اور پریشانی بھی ہوسکتی ہے۔ 
کچھ لوگوں میں کان کے میل کی رنگت سفیدی مائل ہوتی ہے اور یہ خشک اور چھلکوں کی صورت میں نظر آتی ہے،یہ بھی نارمل ہے۔ 
اگرمیل کی رنگت سیاہ یا گہری بھوری ہو تو اگرچہ دیکھنے میں یہ پریشان کن بات نظر آسکتی ہے لیکن درحقیقت اس میں پریشانی کی بات نہیں ہے۔ عموماً معمول سے زیادہ میل پیدا ہونے کی صورت میں سیاہ یا گہری بھوری ہوسکتی ہے۔ کان کی زیادہ عرصے تک صفائی نہ کرنے سے بھی ایسی رنگت نظر آسکتی ہے۔

اگر کان کی میل اتنی پتلی ہے کہ یہ مائع کی طرح بہتی ہوئی باہر آجاتی ہے تو ڈاکٹر سے رابطے کی ضرورت ہے۔ ایسا عموماً کان کے پردے کو پہنچنے والے نقصان کی صورت میں ہوتا ہے۔
اور اسی طرح اگر کان کی میل میں خون کی آمیزش نظر آتی ہے تو بھی فوری طور پر ڈاکٹر سے رابطے کی ضرورت ہوتی ہے کیونکہ ایسا عموماً کان کے پردے یا کان کے اندرونی حصے کو پہنچنے والے نقصان یا کسی اندرونی بیماری کی وجہ سے ہوتا ہے۔