جنرل ایوب کی خوبصورتی سے متاثر برطانوی ماڈل کرسٹین کیلر 75 سال کی عمر میں چل بسیں

تفریح

واشنگٹن (ویب ڈیسک)1960 کے عشرے میں اہم سیاسی شخصیات کے ساتھ تعلقات کی وجہ سے مشہور اور متنازع ہونے والی معروف برطانوی ماڈل کرسٹین کیلر 75 سال کی عمر میں انتقال کر گئی ہیں۔برطانیہ کے سیاسی منظر نامے پر کرسٹین کیلر کا نام 1963 میں اس وقت نمودار ہوا تھا جب کنزیرویٹو پارٹی کی حکومت کے اہم وزیر جون پروفیومو اور 19 سالہ ماڈل کا معاشقہ ذرائع ابلاغ کی زینت بنا، اور پھر یہی سکینڈل وزیراعظم میکملن کی حکومت کو لے ڈوبا۔اس وقت مغرب اور سویت یونین کے درمیان سرد جنگ بھی اپنے عروج پر تھی اور اس خبر نے برطانوی سیاست میں ہلچل پیدا کر دی کہ جس وقت کرسٹین کیلر اور کابینہ کے اہم وزیر جون پروفیومو کے تعلقات کی بات عوامی اخبارات میں خوب اچھالی جا رہی تھی، عین اس وقت کرسٹین برطانیہ میں تعینات ایک روسی سفارتکار کے ساتھ بھی ہم بستری کر رہی تھیں۔ اور کرسٹین نے یہی بات بعد میں تسلیم بھی کی۔نہ صرف روسی سفارتکار، بلکہ نوجوان برطانوی ماڈل کو ان دنوں دنیا کی کئی اہم شخصیات تک رسائی حاصل تھی، جن میں پاکستان کے اس وقت کے فوجی حکمران جنرل ایوب خان کا بھی نام آتا ہے۔

ڈیلی پاکستان کے یو ٹیوب چینل کو سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں