’’باغی‘‘پولیس اہلکارنے پھلوں کی ریڑھی لگا لی

صفحہ اول


بہاولپور (مانیٹرنگ ڈیسک)پنجاب پولیس کے اہلکار دین محمد نے اپنی زبوں حالی بیان کی اور وزیر اعلیٰ پنجاب سے مناظرے کا چیلنج کیا تو پہلے پیٹی بھائیوں نے گرفتار کر کے اسے بد ترین تشدد کا نشانہ بنا یا پھر محکمے کے حکام بالا نے معطل کردیا۔گردش ایام نے دین محمد کو پولیس اہلکار سے پھل فروش بنا دیا۔تفصیل کے مطابق کچھ عرصہ قبل بہاولپور سے تعلق رکھنے والے پولیس اہلکار نے سات ماہ سے تنخواہ نہ ملنے پر اپنی فریاد کی ایک ویڈیو بنا کر فیس بک پر شیئر کی تو سوشل میڈ یا پر ہنگامہ برپا ہو گیا اور سوشل میڈ یا صارفین نے دین محمد کی روداد پر پنجاب حکومت کو سخت تنقید کا نشانہ بنا یا۔دین محمد نے وزیر اعلیٰ پنجاب کو مناظرے کی درخواست کرتے ہوئے کہاتھاکہ خادم اعلیٰ اپنی ٹیم کے ساتھ بہاولپور آئیں تو میں ملازمین کے مسائل کے حوالے سے دستاویزات دوں گا۔اس کا کہناتھا کہ میں نہ تو سیاسی لیڈر ہوں اور نہ ہی میرا کسی سیاسی جماعت سے تعلق ہے ،میرا قصور صرف اتنا ہے کہ جب بچوں کو پڑھائی سے بھگا دیا گیا ،بجلی کا میٹر کاٹ دیا گیا ،میرا سامان گھر سے اٹھا کر باہر پھینک دیا گیا اور چولہا بند ہو گیا۔اس کے بعد پنجاب پولیس نے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرنے پر دین محمد کو گرفتار کیا اور بد ترین تشدد کا نشانہ بنا یااور پھر معطل کردیا۔اب دین محمد نے بہاولپور میں پھلوں کی ریڑھی لگا لی ،سوشل میڈ یا پر جب تصویر وائرل ہوئی تو صارفین نے ایک بار پھر دین محمد کی کہانی پر اپنے غم و غصے کا اظہار کیا۔