دربار کے سجادہ نشین کیخلاف بیوہ اور اس کی 2 بیٹیوں سے زیادتی، ویڈیو بنانے کا مقدمہ درج

گجرات

گجرات(ویب ڈیسک) معروف روحانی شخصیت سائیں کانواںوالی کے دربار کا گدی نشین زنا بالجبر کا مقدمہ درج ہونے پر فرار، فلمیں بناتا رہا ، بیوہ کی دُہائی، تفصیلات کے مطابق تھانہ سول لائن پولیس نے ساوات کالونی کی رہائش بیوہ بلقیس بی بی اور اس کی دو بیٹیوں نیلم اور نگہت بی بی کے ساتھ ایک ایک ماہ قبل مبینہ طورپر زنا بالجبر کرنے ، ویڈیو فلم اور تصویریں بناکر ان کو بلیک میل کرنے اور بعد ازاں اس کے دامادکے ریڑھا کو آگ لگانے پر سائیں کانواں والی سرکار کے سجادہ نشین سائیں اختر حسین ولد سائیں انور سکنہ دربار کانواں والی سرکار کے خلاف حدود آرڈینس اور ریڑھا جلانے پر 436 ت پ کے تحت مقدمہ درج کر لیا اور پولیس ملزم کی گرفتاری کے لیے چھاپے ماررہی ہے تاہم ملزم سائیں اختر حسین ابھی تک روپوش ہے بیوہ خاتون مسمات بلقیس بی بی نے پولیس کو بیان دیا ہے کہ اسکا داماد محمد عنصر ریڑھاپر سبزی فروخت کرتا تھا بعدازاں وہ سائیں اختر کے مال مویشیوں کی بھی دیکھ بھال کرتا تھا اس دوران سائیں اختر کا بلقیس بی بی کے گھر آنا جانا شروع ہو گیا اور سائیں اختر بیوہ بلقیس بی بی اور اس کی دو بیٹیوں نیلم اور نگہت کے ساتھ ایک ماہ تک زیادتی کرتا رہا اور ان کی مووی اور تصویریں بھی بنائی اور اور ان کو بلیک میل کرنا شروع کر دیا جب سائیں اختر نے اس کی لڑکی کو گھر بلایا تو انکاری پر ا س کے خاوند کا ریڑھا بھی جلادیا اور گھناﺅنا راز فاش ہونے پر سائیں سرکار روپوش ہو گئے بلقیس بی بی کا یہ بھی کہنا ہے کہ سائیں سرکار نے اس کے اور اس کی لڑکیوں کے علاوہ کئی عورتوں کے ساتھ اس قسم کی گھناﺅنی حرکت کی ہے۔ علاقہ کے مکینوں نے بتایا کہ مذکورہ گدی نشین سائیں اختر حسین پر قتل کا مقدمہ بھی چل رہا ہے جبکہ دربار اور اس کے گردونواح میں منشیات کے دھندے میں ملوث افراد کی پشت پناہی بھی گدی نشین سائیں اختر کرتاہے۔ مکینوں نے مطالبہ کیا ہے کہ اس قدر معروف روحانی شخصیت کے دربار پر اس قسم کی شخصیت کا گدی نشین بننا پڑا سوالیہ نشان ہے ایسے عناصر کا قلع قمع ہونا چاہیے۔