ٹیچر کے مزید 2 طالبات سے تعلقات، ایک سکول چھوڑگئی

حافظ آباد

حافظ آباد (ویب ڈیسک) سپیشل ایجوکیشن سنٹر میں معذور طالبہ سونیا نور کے ساتھ زیادتی کرنے والا ٹیچر زوہیب اور اس کا سہولت کار ذکاءاللہ عبوری ضمانت کروانے کے بعد شامل تفتیش ہونے کیلئے تھانہ صدر پہنچ گئے۔ ذکاءاللہ اپنے بیانات ریکارڈ کروانے کے بعد گھر چلا گیا جبکہ زوہین تھانہ میں ایس ایچ او کے کمرے میں ہی بیٹھا ہوا ہے جب اس کو پوچھا گیا کہ وہ گھر کیوں نہیں جاتا تو اس نے کہا کہ اس کو ڈر ہے کہ کہیں پولیس دوبارہ ان کے گھر ریڈ نہ کردے اس لئے 5 جنوری کو عدالت کے فیصلہ کے بعد اگر ضمانت منظور ہوگئی تو گھر جاﺅں گا، سپیشل ایجوکیشن سنٹر میں اپنے ہی ٹیچر کی مبینہ زیادتی کا شکار ہونے والی سونیا نور نے انکشات کیا ہے کہ ٹیچر زوہیب کے اس کے علاوہ بھی 2طالبات کے ساتھ تعلقات تھے، ایک سکول چھوڑگئی ہے جبکہ دوسری ابھی تک سکول میں زیر تعلیم ہے۔ سونیا نور کے اس انکشاف پر سکول کی انڈمنسٹریشن کی کارکردگی سوالیہ نشان بن گئی ہے۔

پسند کی شادی ‘ پنچایت میں 25 لاکھ جرمانہ

سپیشل ایجوکیشن سنٹرمیں اتنا بڑا وقوعہ ہونے کے باوجود تمام اداروں کی پراسرار خاموشی، کسی ادارے نے بھی ابھی ایڈمنسٹریشن کو شوکاز نوٹس جاری نہیں کیا ، جس ادارے میں سکول ٹائمنگ میں معصوم طالبہ کے ساتھ ڈیڑھ سال تک زیادتی ہوتی رہی اور اس کی ایڈمنسٹریشن لاعلم رہی اور اب اس واقعہ کے منظر عام پر آنے کے بعد کسی صوبائی یا وفاقی ادارے نے اس کا نوٹس نہیں لیا اور پراسرار خاموشی اختیار کی ہوئی ہے جس سے ان ادارون کی کارکردگی اور گڈ گورننس کا پول کھل گیا ہے۔