رات کی تاریکی میں درالامان سے 3خواتین 2بچوں سمیت فرار

حافظ آباد

حافظ آباد (صباح نیوز)درالامان (شیلٹرہوم)حافظ آبادسے رات کو مبینہ طور پر کھڑکی توڑ کر 3خواتین 2بچوں سمیت دوسری منزل سے رسہ کے ذریعہ اترکر فرار ہوگئیں،مبینہ طورپرانچارج شیلٹرہوم مسزرعنا افضل چٹھہ نے بھاری معاوضہ لیکر لڑکیوں کو فرارکروایا جو اپنے گھروں سے بھاگی ہوئی تھیں ۔ خدشہ ہے کہ ان خواتین کو گھرسے فرارہونے پر قتل نہ کردیں ۔

ذرائع کے مطابق کوٹ حسن خان کی نند اوربھاوج ساجد بی بی زوجہ ریاست علی اورگلشن طاہرہ دخترنذرمحمداعوان اور پنڈی بھٹیاں کی شگفتہ بی بی زوجہ سلطان ڈیڑھ ماہ سے دارلامان(شیلٹرہوم) میں عدالت کے حکم پر رہ رہی تھیں اور مبینہ طورپر گذشتہ رات شیلٹر ہوم کی دوسری منزل کی لوہے کی کھڑکی کی گرل توڑ کر چارپائیوں کی رسی نکال کراس کے ذریعہ دوبچوں سمیت فرارہونے میں کامیاب ہوگئیں۔ جبکہ خواتین کی جسامت بھاری بھرکم بتائی جاتی ہے ۔یہ خواتین رسہ کی مددسے کیسے دوبچوں سمیت دوسری منزل سے اتریں ہوں گی جب تک ان کاکوئی معاون نہ ہو۔

انچارج شیلٹر ہوم مسزرعناافضل چٹھہ کے مطابق رات کے وقت ایک چوکیدار اورایک پولیس ملازم موجود تھارات گیارہ بجے تک جب ان ملازمین نے رائونڈ کیا توخواتین موجود تھیں۔ خواتین کے فرار کی کاروائی اس کے بعدکی ہی ہے ۔شیلٹر ہوم سوشل ویلفئیر اوربیت المال کے تحت کام کررہے ہیں اس سلسلہ میں ڈسٹرکٹ آفیسر سوشل ویلفیئرنوازگوھر کے مطابق اس واقعہ کے متعلق 2رکنی کمیٹی ڈپٹی ڈی اوز شاہد اسحاق اور میڈم مدیحہ پر مشتمل بنادی گئی ہے ۔ ذرائع کے مطابق ان خواتین کو انچارج شیلٹرہوم نے بھاری رقم کے عوض فرارکروایا ہے تاکہ ان کے ورثاء ڈرا دھمکا کر یامنت سماجت سے ان خواتین سے اپنے مطلب کابیان عدالت میں دلواسکیں۔ یہ بھی خدشہ ہے کہ کہیں ان خواتین کو ان کے ورثاء گھر سے فرارہونے پر قتل ہی نہ کرڈالیں۔