خافظ آباد : ڈی ایچ کیو ہسپتال آ نے والی حاملہ خاتون کو دھکے مار کر نکال دیا گیا ،مریضہ ہسپتال کے باہر درد سے تڑپتی رہی

حافظ آباد

حافظ آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) حافظ آباد کے ڈی ایچ کیو ہسپتا ل میں علاج کیلئے آنے والی حاملہ خاتون کو دھکے مار کر باہر نکال دیا گیا ۔خاتون ہسپتال کے باہر درد سے تڑپتی رہی ۔

نیو نیوز کے مطابق حاملہ خاتون کشور بی بی تشویشناک حالت میں ڈی ایچ کیو ہسپتال پہنچی تو لیڈی ڈاکٹر نے اسے چیک کیے بغیر ہی لاہور کیلئے ریفر کر دیا اور سکیورٹی گارڈ کو کہہ کر خاتون کو ہسپتال سے باہر نکال دیا ۔ حاملہ خاتون کی والدہ ہسپتال کے گیٹ پربیٹی کے علاج کیلئے دہائی دیتی رہی مگر کسی نے اس کی نہ سنی ۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

ذرائع کا کہنا ہے کہ لیڈی ڈاکٹر نے مریضہ کی حالت دیکھ کر علاج کرنے سے انکار کر دیا اور لاہور کیلئے ریفر کر دیا جس پر خاتون کی والدہ نے اسرار کیا تو لیڈی ڈاکٹر نے سکیورٹی گارڈ کو کہہ کر انہیں ہسپتال سے باہر نکال دیا ۔ خاتون ہسپتال کے گیٹ پر بے ہوشی کی حالت میں زندگی اور موت کی کشمکش میں تھی تاہم واقعہ منظر عام پر آنے کے بعد ہسپتال انتظامیہ نے اس کا علاج شروع کر دیا ۔

روزنامہ پاکستان کی خبریں اپنے ای میل آئی ڈی پر حاصل کرنے اور سبسکرپشن کیلئے یہاں کلک کریں

ایم ایس ڈی ایچ کیو ڈاکٹر حامد رفیق کے خبر کی بے بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ خاتون کو رات کے وقت ہسپتا ل لایا گیا تھا جہاں لیڈی ڈاکٹر نے اس کا چیک اپ کر کے لاہور جانے کیلئے کہا ۔ ان کا کہناتھا کہ رات کے وقت ہسپتال میں ڈاکٹروں کی تعیناتی نہیں ہوتی جس وجہ سے خاتون کا علاج ممکن نہیں ہو سکا تاہم اب اس خاتون کا علاج جاری ہے ۔