حیدر آباد سے لاہور جانے والی طالبہ پر اسرار طور پر لاپتہ

حیدرآباد

حیدرآباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) حیدرآباد سے لیاقت میڈیکل یونیورسٹی کی سکینڈ ائر کی طالبہ پر اسرار طور پرلاپتہ ہوگئی۔ایک ماہ قبل لاپتہ ہونے والی طالبہ نے اسوہ جتوئی نامی لڑکی کے فیس بک اکاﺅنٹ سے بھائی کو پیغام بھیجا کہ وہ خیریت سے ہے اسے تلاش نہ کیا جائے اوروہ خلافت کی سرزمین پر ہے۔ وہ دعا گو ہے کہ اس کے گھر والے بھی جلد اس سرزمین کی جانب ہجرت کریں۔تاہم تاحال یہ واضح نہیں ہو سکاہے کہ یہ طالبہ اس وقت کہاں پر ہےجبکہ دوسری جانب پولیس تحقیقات جاری رکھے ہوئے ہے۔

داعش کی آمدنی ، زیر انتظام علاقے اور آبادی میں تقریباََایک تہائی کمی ، خود ساختہ خلافت لمبا عرصہ نہیں چلے گی :امریکی ادارہ
ایس ایس پی حیدر آباد عرفان بلوچ نے میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ایم بی بی ایس سکینڈ ائر کی نورین  نجی ٹرانسپورٹ کمپنی کی بس میں حیدرآباد سے لاہور کے لئے گئی تھی۔سی ٹی وی فوٹیج کے مطابق طالبہ نے اپنی پہچان چھپانے کے لئے برقعہ پہنا ہوا تھا جب کہ ہاتھوں پر دستانے تھے۔ طالبہ اپنی فیس بک پر شدت پسندانہ پوسٹیں کرتی تھی جس کی وجہ سے فیس بک نے اس کی فیس بک آئی ڈی بند کردی تھی۔

طالبہ کے رشتہ داروں اور دوستوں سے معلومات جمع کر رہے ہیں جس کی بناپر کارروائی کو آگے بڑھایا جا رہا ہے۔ایس ایس پی کا مزید کہنا تھا کہ اس امر کو رد نہیں کیا جا سکتا کہ وہ دولت اسلامیہ کے شدت پسندوں سے رابطے میں تھی۔ تاہم  طالبہ کے گھر والوں نے اس تاثر کی نفی کی ہے۔