امریکہ کی چھتر چھایا میں داعش نے افغانستان میں پنجے گاڑے: حامد کرزئی

بین الاقوامی

کابل (ڈیلی پاکستان آن لائن) سابق افغان صدر حامد کرزئی ایک بار پھر امریکہ پر برس پڑے، الزام عائد کردیا کہ امریکہ ان کے ملک میں داعش کے ساتھ مل کر کام کر رہا ہے۔
الجزیرہ ٹی وی کے پروگرام اپ فرنٹ میں دیے گئے انٹرویو میں حامد کرزئی نے الزام عائد کیا کہ امریکہ نے افغانستان میں قدم جمانے میں داعش کی بھرپور طریقے سے مدد کی۔ ’میں سمجھتا ہوں کہ داعش کو امریکہ نے اپنی نگرانی میں قدم جمانے کی اجازت دی، داعش کو افغانستان میں پنجے گاڑنے کیلئے بھرپور طریقے سے فوجی، سیاسی اور انٹیلی جنس مدد فراہم کی گئی‘۔

یہ خبر بھی پڑھیں: علاقائی ممالک افغانستان سے جنگ ختم کرنے میں اشرف غنی حکومت کی مدد کریں:حامد کرزئی کی اپیل
انہو ں نے کہا کہ امریکہ نے خود ہی داعش کو افغانستان میں پھیلایا جس کے بعد ٹرمپ انتظامیہ نے مدر آف آل بم چلایا لیکن اس کے ایک روز بعد داعش نے اگلے ضلع پر قبضہ کرلیا۔ اس کارروائی سے یہ بات بڑی واضح ہوجاتی ہے کہ افغانستان میں داعش کے سر پر امریکہ کا ہاتھ ہے۔
واضح رہے کہ کچھ عرصہ پہلے امریکہ نے پاک افغان سرحد پر واقع آچن ضلع میں جی بی یو 43 مدر آف آل بم نامی دنیا کا سب سے بڑا نان نیوکلیئر بم پھوڑا تھا جس کے نتیجے میں 36 افراد زندگی کی بازی ہارے تھے۔ اس موقع پر بھی حامد کرزئی نے امریکہ کے اس اقدام کی شدید الفاظ میں مذمت کی اور کہا کہ امریکہ نے نئے اور خطرناک ہتھیاروں کے تجربات کرنے کیلئے افغانستان کو تجربہ گاہ بنالیا ہے جو غیر انسانی اور انتہائی ظالمانہ اقدام ہے۔

اس خبر کو بھی پڑھیں: امریکا کے داعش سے رابطے ،امریکی اڈوں سے کالعدم تنظیم کو اسلحہ فراہم کیا جاتاہے، حامد کرزئی کا الزام
حامد کرزئی نے کہا کہ انہوں نے انٹرنیشنل کریمنل کورٹ کے نمائندوں کو افغانستان میں جنگی جرائم کی تحقیقات کی دعوت دی ہے۔ انہوں نے یہ بھی تسلیم کیا کہ ان کے اپنے دور میں بھی افغانستان میں جنگی جرائم کیے گئے ہیں ،انٹرنیشنل کریمنل کورٹ کی جانب سے ان کی بھی تحقیقات کی جانی چاہئیں۔’ میرے دور میں افغان سکیورٹی فورسز، امریکی افواج اور دوسری قوتوں کی طرف سے انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں کی گئیں، میں جنگی جرائم کی تحقیقات میں ہر طرح کی مدد کرنے کیلئے تیار ہوں خواہ ان کا نتیجہ میرے اپنے خلاف ہی کیوں نہ آئے‘۔

یہ خبر بھی پڑھیں: پاکستان اور افغانستان آپس میں 2بھائیوں کی طرح بیٹھ کر اپنے معاملات حل کریں:حامد کرزئی
انہوں نے مغربی انسانی حقوق کی تنظیموں کے دعووں اور الزامات مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ان کے دور میں انسانی حقوق کی عالمی تنظیمیں اور مغربی میڈیا افغانستان میں ہونے والی انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کو چھپانے میں لگے ہوئے تھے ۔ ’ انسانی حقوق کی تنظیموں نے نہیں بلکہ میں نے خود انہیں افغانستان میں جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے بارے میں آگاہ کیا تھا‘۔

حامد کرزئی کے انٹرویو کی ویڈیو دیکھیں