بھارتی فوج کا بریگیڈیئر اور کرنل کی بیگم، ایسی شرمناک ترین خبر آگئی کہ بھارتی فوجی کسی کو منہ دکھانے کے قابل نہ رہے

بین الاقوامی

نئی دلی (نیوز ڈیسک) بھارتی فوج کی ’بہادری‘ سے تو ساری دنیا واقف ہے لیکن ان کی اخلاقی حالت کیسی ہے، اب یہ بھی جان لیجئے۔اس فوج کا ایک بریگیڈیئر اپنے ماتحت کرنل کی اہلیہ کے ساتھ شیطانی مراسم استوار کرتا رنگے ہاتھوں پکڑا گیا، جس کے بعد خاموشی سے اس کا کورٹ مارشل کیا گیا اور سزا کے طور پر اسے 10 سال کی سینیارٹی سے محروم کردیا گیا ہے۔
اخبار ٹائمز آف انڈیا کے مطابق یہ بدقماش بریگیڈیئر چینی سرحد کے محاذ پر تعیناتی کیلئے تیار کی گئی ایک اہم انفینٹری بریگیڈ کی کمان کررہا تھا۔سینیارٹی سے محرومی کی سزا کے بعد اگر وہ فوج کی ملازمت جاری رکھے گا تو اگلے 10 سال تک میجر جنرل کے عہدے پر ترقی نہیں پاسکے گا۔

بھارتی فوج کا بریگیڈیئر اور کرنل کی بیگم، ایسی شرمناک ترین خبر آگئی کہ بھارتی فوجی کسی کو منہ دکھانے کے قابل نہ رہے
اخبار کا کہنا ہے کہ کسی فوجی افسر کی جانب سے اپنے ساتھی افسر کی اہلیہ کے ساتھ ناجائز تعلقات استوار کرنا سنگین جرم سمجھا جاتا ہے اور عموماً ایسے افسران کو فوری طور پر فوج سے نکال دیا جاتا ہے، لیکن چونکہ اس بریگیڈیئر نے اپنے جرم کا اعتراف کرلیا تھا لہٰذا اسے قدرے ہلکی سزا دی گئی ہے۔
شیطان صفت بریگیڈیئر کے خلاف کل 13 الزامات عائد کئے گئے تھے، جن میں ناجائز تعلقات، دستاویزات میں ہیر پھیر، اور فوجی نظم و ضبط کی خلاف ورزی کے الزامات بھی شامل تھے۔ اس کے کورٹ مارشل کے مقدمے کی سماعت ایک میجر جنرل اور چھ بریگیڈیئروں پر مشتمل عدالت نے کی۔
یاد رہے کہ بھارتی افواج میں سامنے آنے والا یہ پہلا جنسی سکینڈل نہیں ہے۔ اس سے پہلے بھارتی فضائیہ کے ایک پائلٹ کو اپنے سینئر افسر کی اہلیہ کے ساتھ ناجائز تعلقات رکھنے کے جرم میں نکالا جاچکا ہے۔ بھارتی بحریہ نے بھی جنسی جرائم میں ملوث اپنے دو افسروں کو نکالا ہے۔ یہ دونوں افسران کمانڈر کے رینک پر تعینات تھے۔